The news is by your side.

Advertisement

کرونا کے بڑھتے کیسز پر وزیراعلیٰ سندھ نے بڑا مطالبہ کردیا

اسلام آباد: وزیراعلیٰ سندھ نے ملک میں کرونا کے بڑھتے کیسز پر وفاقی حکومت کے سامنے اہم تجاویز رکھ دی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت اسلام آباد میں جعلی اکاؤنٹس اسکینڈل کیس میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو میں وزیراعلیٰ سندھ نے وفاقی حکومت کو تجویز دی کہ کرونا وائرس کی تیسری لہر کا مقابلہ کرنے ملک میں دو ہفتے کیلئے لاک ڈاؤن اور انٹرا سٹی ٹرانسپورٹ بند کردی جائے۔

مراد علی شاہ نے خدشہ ظاہر کیا کہ کرونا کی موجودہ لہر سے نہ نمٹا گیا تو ہم بڑے بحران میں جاسکتے ہیں، دنیا کرونا ویکسین لگا کر اس وبا سے باہر نکل رہی ہے جبکہ ہم نے ابھی تک ویکسی نیشن کا عمل شروع نہیں کیا ہے، ابھی تک جو ویکسین لگی وہ “آٹے میں نمک کے برابر بھی نہیں”۔

میڈیا سے گفتگو میں وزیراعلیٰ سندھ نے وفاقی وزیر خزانہ حفیظ شیخ کو وزارت سے برطرف کرنے پر وفاقی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ یہ کہتے ہیں کہ معیشت درست سمیت میں ہے، اتنی اچھی معیشت ہے کہ وزیرخزانہ کونکالنا پڑا۔

نیب کیسز سے متعلق پوچھے گئے سوال پر وزیراعلیٰ نے جواب دیا کہ نیب نے دو سال پہلے بلایا تھا، اس وقت بھی سوالات کےجواب دےدیئےتھے، ٹی وی سے پتا چلا کہ ریفرنس فائل ہوا ہے، 100میگاواٹ کا کامیاب پاورپلانٹ لگایا، عوام کو بجلی مل رہی ہے،پتا نہیں مجھےکیوں سزا مل رہی ہے؟۔

واضح رہے کہ این سی او سی کے مطابق چوبیس گھنٹے کے دوران ملک بھر میں کرونا کے 4 ہزار 757 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ گذشتہ چوبیس گھنٹے میں کرونا کے مزید 78 مریض انتقال کرگئے، جس کے باعث پاکستان میں کرونا کے باعث جاں بحق مریضوں کی تعداد 14 ہزار 434 ہوگئی ہے۔

کرونا وبا کی تیسری لہر کا خوفناک پہلو یہ ہے کہ تیسری لہر میں بچے مہلک وائرس کا شکار ہورہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں