The news is by your side.

Advertisement

ایدھی فاؤنڈیشن کے دفاتر پر بااثر افراد کا قبضہ، وزیر اعلیٰ کا ایکشن

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کمشنر حیدرآباد کو ایدھی فاؤنڈیشن ٹھٹہ کے دفتر کا معاملہ جلد حل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر معاملہ حل نہیں ہوسکتا تو سرکاری اراضی پر ایدھی فاؤنڈیشن کو دفتر کے لیے جگہ فراہم کریں۔

تفصیلات کے مطابق ایک روز قبل فیصل ایدھی نے اپنی والدہ بلقیس ایدھی کے ہمراہ کراچی پریس کلب پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے انکشاف کیا تھا کہ ٹھٹہ اور اندرونِ سندھ میں قائم ایدھی فاؤنڈیشن کے دفاتر پر بااثر افراد نے قبضہ کرلیا۔

انہوں نے کہا کہ ٹھٹہ کا دفتر جو 1 ہزار اسکوائر فٹ پر محیط ہے اُسے تنازع شدہ قرار دے کر سرکاری محکمے کے آفسر نے تالا ڈال دیا جس کے بعد وہاں فلاحی سرگرمیاں بالکل بند ہوگئیں۔

فیصل ایدھی اور اُن کی والدہ نے انکشاف کیا کہ اندرونِ سندھ میں واقع دفاتر پر لینڈ مافیا کے کارندے قبضے کررہے ہیں جن کی سرپرستی بااثر افراد کررہے ہیں، انہوں نے وفاقی حکومت اور وزیراعلیٰ سندھ سے فوری طور پر نوٹس لینے کی استدعا بھی کی تھی۔

پڑھیں: ایدھی صاحب کے بعد فنڈز میں کمی آئی، فیصل ایدھی

فیصل ایدھی کے مطابق مذکورہ جگہ نیشنل ہائی وے اتھارٹی کی جانب سے ایدھی فاؤنڈیشن کو 1985 میں عطیہ کی گئی تھی اور اُن کے پاس اس کا لیٹر بھی موجود ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے فیصل ایدھی کی پریس کانفرنس کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر حیدرآباد کو معاملہ جلد از جلد حل کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ اگر مسئلہ حل نہیں ہوتا تو ایدھی فاؤنڈیشن کو دفتر کے لیے سرکاری اراضی فوری فراہم کریں۔

وزیر داخلہ سندھ کا نوٹس

وزیرداخلہ سندھ نے آئی جی سندھ پولیس نے فوری رپورٹ طلب کی اور انہیں مسئلہ جلد از جلد حل کرنے کے احکامات بھی جاری کیے۔

ناصر حسین شاہ کا فیصل ایدھی سے رابطہ

وزیراطلاعات سندھ ناصر حسین شاہ نے واقعے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے فیصل ایدھی سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور تمام مسائل حل کروانے کی یقین دہانی کروائی، انہوں نے کہا کہ ایدھی کی خدمات کے معترف ہیں اس لیے کسی بھی دفتر یا زمین پر قبضہ نہیں ہونے دیں گے۔

ایدھی کی زمینوں پر قبضے سے کوئی تعلق نہیں، فریال تالپور

دوسری جانب صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور نے اپنے اوپر عائد ہونے والے الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ٹھٹہ کی زمینوں پر قبضے سے متعلق سامنے آنے والی خبریں جھوٹی ہیں، مذکورہ 300 ایکڑ زمین سے کوئی تعلق نہیں وزیر اعلیٰ سندھ معاملے کی تحقیقات کروائیں۔

فریال تالپور نے مزید کہا کہ مخالفین نے سیاسی بنیادوں کے باعث مجھے نشانہ بنارہے ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں