The news is by your side.

Advertisement

وزیراعلیٰ سندھ کی خواجہ اظہار کے گھرآمد، حملہ آوروں کو گرفتاری کرنے کی یقین دہانی

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ سید مرادعلی شاہ نے قاتلانہ حملے میں محفوظ رہنے والے اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن سے ملاقات کی اور انہیں حملہ آوروں کی گرفتاری کی یقین دہانی بھی کرائی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ حج کا فریضہ ادا کرنے کے بعد ریاض سے کراچی پہنچے اور آتے ہی سب سے پہلے سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن کے گھر آئے اور قاتلانہ حملے میں محفوظ رہنے پر اللہ کا شکر ادا کرتے ہوئے ان سے خیریت دریافت کی ساتھ ہی واقعہ کی تفصیلات معلوم کیں۔

اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی کراچی کے علاوہ رکن سندھ اسمبلی سعید غنی اور پاکستان پیپلز پارٹی کراچی کے رہنما وقار مہدی و راشد ربانی بھی وزیراعلیٰ سندھ کے ساتھ ہمراہ موجود تھے۔

ملاقات کے بعد وزیراعلیٰ سندھ نے میڈیا  سے کہا کہ خواجہ اظہار الحسن پر قاتلانہ حملہ کرنے والے ملزمان کو نہیں چھوڑیں گے اور ملزمان کو ہر صورت کیفر کردار تک پہنچائیں گے اور اس معاملے کی خود نگرانی کررہا ہوں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ مجھے اپوزیشن لیڈر پر حملے کی خبر مکہ مکرمہ میں ملی جس پر میں کافی متفکر بھی تھا، اللہ نے اپنا خاص کرم کیا اور خواجہ اظہار محفوظ رہے تاہم اس افسوسناک واقعہ میں ایک پولیس اہلکار نے فرائض کی ادائیگی میں جان کا نذارانہ دیا جب کہ ایک راہگیر بچہ ارسل کامران بھی شہید ہوا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سندھ میں سب سے زیادہ سیکیورٹی ایم کیو ایم کے بھائیوں کو فراہم کی گئی ہے تاہم وسائل اور پولیس اہلکاروں کی کمی کی وجہ سے کچھ مسائل ضرور ہیں اور سندھ حکومت کم وسائل کے ساتھ اپنا کردار بھرپور طریقے سے ادا کرنے کے لیے مصروف عمل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ صرف حکومت نے ہی نہیں بلکہ دہشت گردوں کے خلاف سب کو مل کر جہاد کرنا ہے اور اس دہشت گردانہ مائنڈ سیٹ کو شکست دینی ہے جس کے لیے معاشرے کے ہر ایک فرد کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

اس موقع پر سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن نے وزیراعلیٰ سندھ اور ایڈیشنل آئی جی کی آمد پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ مجھ پر حملے کا واقعہ اسٹریٹ کرائم کا نہیں بلکہ دہشت گردی کا واقعہ ہے جو کہ مسجد کے قریب کیا گیا اور جس میں ایک پولیس اہلکار اور ایک راہگیر بچہ شہید ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ ہم سب کو مل کر لڑنی ہے جس میں میرے شہر کے کئی نامور لوگ شہید ہو چکے ہیں اور اگراس عفریت پر ابھی قابو نہیں پایا گیا تو یہ مزید لوگوں کو اپنا شکار کرے گی۔

بعد ازاں وزیراعلٰی سندھ خواجہ اظہار الحسن پر قاتلانہ کے دوران جاں بحق ہونے والے بچے ارسل کامران کے گھر بھی گئے اور اہل خانہ سے تعزیت کی اور فاتحہ خوانی کی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں