وزیر اعلیٰ پنجاب کا قصورمیں 7 سالہ بچی کے قتل کا نوٹس -
The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعلیٰ پنجاب کا قصورمیں 7 سالہ بچی کے قتل کا نوٹس

لاہور: وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے صوبہ پنجاب کے شہر قصور میں قتل ہونے والی 7 سالہ بچی زینب کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے آئی جی پنجاب سے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے جبکہ انہوں نے آئی جی کو جائے وقوعہ پر پہنچنے کی بھی ہدایت کی ہے۔

وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ ملوث ملزمان کو گرفتار کر کے قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔ معصوم بچی کے قاتل قرار واقعی سزا سے بچ نہیں پائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ متاثرہ خاندان کو ہر قیمت پر انصاف فراہم کیا جائے گا۔ کیس پر پیش رفت کی ذاتی طور پر نگرانی کروں گا۔

یاد رہے کہ قصور کے علاقے روڈ کوٹ کی شہری 7 سالہ زینب 5 جنوری کی شام ٹیوشن پڑھنے کے لیے گھر سے نکلی تھی لیکن واپس نہیں لوٹی۔ بچی کے والدین عمرے کے لیے سعودی عرب گئے ہوئے تھے جبکہ بچی اپنی خالاؤں کے ساتھ رہائش پذیر تھی۔

چار روز بعد بچی کی لاش قصور کی ایک کچرا کنڈی سے دریافت ہوئی۔ پولیس کے مطابق بچی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا گیا تھا۔

وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے زینب کے بہیمانہ قتل کا نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم دیا ہے۔

شہرمیں شٹرڈاؤن ہڑتال


دوسری جانب زینب کے بہیمانہ قتل کے خلاف قصورمیں شٹرڈاؤن ہڑتال کی جارہی ہے۔  شہربھرمیں دکانیں، مارکیٹس و دیگر تجارتی مراکز بند کردیے گئے ہیں جبکہ ڈسٹرکٹ بار نے بھی ہڑتال کردی ہے۔

بچی کے اہلخانہ کا کہنا ہے کہ زینب کے والدین کی عمرے سے آج واپسی ہورہی ہے جس کے بعد بچی کی نماز جنازہ ادا کردی جائے گی۔

خیال رہے کہ قصور میں بچیوں کو اغوا کے بعد قتل کرنے کا یہ 10 واں واقعہ ہے۔ تاحال پولیس ایک بھی ملزم کو گرفتار کرنے میں ناکام ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں