سندھ: گیس کا بحران شدت اختیار کر گیا، سی این جی اسٹیشنزغیر معینہ مدت کے لیے بند
The news is by your side.

Advertisement

سندھ: گیس کا بحران شدت اختیار کر گیا، سی این جی اسٹیشنزغیر معینہ مدت کے لیے بند

کراچی: صوبہ سندھ میں گیس کی لوڈشیڈنگ شدت اختیار کر گئی، سی این جی اسٹیشن تیسرے روز بھی بند رہے ہیں، بحران مزید شدت اختیار کرسکتا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق ایس ایس جی سی نے صنعتوں کو گیس کی فراہمی معطل کردی، تمام صنعتی کیپٹوپاورپلانٹس کی سپلائی کو غیرمعینہ مدت تک بند کر دیا، جس کے باعث سندھ میں سی این جی اسٹیشنزغیر معینہ مدت کےلیے بند کر دیے گئے۔

شہرِ قائد کے کئی علاقوں‌ میں گیس کا پریشر انتہائی کم ہے، جس کی وجہ سے گھریلو صارفین شدید اذیت میں‌ مبتلا ہیں

ایس ایس جی سی کے مطابق تمام انڈسٹریز بشمول زیروریٹیڈ، رائس ایکسپورٹرزکوگیس کی سپلائی بند رہے گی.

سندھ میں آج دوسرے روز بھی سی این جی اسٹیشنز بند ہیں، جو بحران کی وجہ سے لگاتار تین روز بند رہے ہیں. یہ پہلا موقع ہے، جب سندھ میں مسلسل تین روز  سی این جی کی فراہمی معطل رہے گی.

سردی آتے ہی گھروں کے چولہےبھی ٹھنڈے  پڑ گئے ہیں، محکمہ گیس کا کہنا ہے  کہ فنی خرابی کے باعث گھریلو اور کمرشل صارفین کوسپلائی میں دشواری کاسامنا ہے، پنجاب میں بھی ایک روزکےلیے گیس بند رہے گی۔

یاد رہے کہ شہرِ قائد کے تین صنعتی زونز میں گذشتہ چار روز سے گیس کی فراہمی تعطل کا شکار ہے، گیس کا پریشر کم ہونے کی وجہ سے شہریوں‌ کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔

کراچی میں کیپٹو پاور پلانٹ سے چلنے والے بڑے ایکسپورٹ کارخانے بند ہیں، ترجمان سوئی سدرن کے مطابق گیس فیلڈز  میں فنی خرابی پر صنعتوں کو فراہمی بند ہوئی۔

احتجاج کی کال اور اپیل

سی این جی کی مختلف ایسوی ایشنز نے  سی این جی بندش کے  خلاف احتجاج کی کال دے دی۔

ایسوی ایشن کے رہنماؤں کی جانب سے کل صبح ساڑھے 9 بجے ایس ایس جی سی ہیڈ آفس کے سامنے احتجاج کا اعلان کیا ہے،  مظاہرین نے  شاہراہ فیصل بلاک کرنے کی بھی دھمکی دی ہے۔

تاجر رہنماؤں نے بھی مسئلہ فوری حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ تاجر رہنما سراج قاسم تیلی نے وزیراعظم سے گیس بندش کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں