The news is by your side.

Advertisement

ایسے پاکستان کے حامی ہیں، جہاں قانون کی حکمرانی ہو: آرمی چیف

پاکستان نے سیکیورٹی چیلنجز سے نمٹنے کا کٹھن مرحلہ عبور کرلیا ہے

راول پنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے سیکیورٹی چیلنجز سے نمٹنے کا کٹھن مرحلہ عبور کرلیا۔

ان خیالات کا اظہار آرمی چیف نے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے دورے کے موقع پر کیا، ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ہرسطح پرامن واستحکام کے لئے کوشاں ہے۔

پاک فوج کے شعبہ برائے تعلقات عامہ کے مطابق آرمی چیف نے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کا دورہ کیا، اس موقع پر انھوں نے نیشنل سیکیورٹی اور جنگی کورسز کی تکمیل پرشرکا کو مبارک باد دی۔

آرمی چیف نے کہا کہ علاقائی امن وترقی کے لئے فریقین کو جارحانہ سوچ سے نکلنا ہوگا، تعاون پرمبنی فریم ورک ہی سے خطے میں امن کا قیام ممکن ہے۔

جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ پاکستان نے سیکیورٹی چیلنجزسے نمٹنے کا کٹھن مرحلہ عبور کرلیا، سنجیدگی سے خطے میں دستیاب مواقع کےاستعمال کے لئے مثبت راہ اپنانی ہوگی۔

سپہ سالار کا کہنا تھا کہ پاکستان نے سیکیورٹی چیلنجز سے نمٹنے کے لئے اپنے حصے کا کام کرلیا ہے، ہم ایسے پاکستان کے حامی ہیں، جہاں قانون کی حکمرانی ہو.

آرمی چیف نے کہا کہ حقوق کی بات اورفرائض کی انجام دہی کے لئے یکساں سوچ ہونی چاہیے، عقیدے اور خیالات سے قطع نظر پاکستان تمام پاکستانیوں کا ہے.

آرمی چیف نے کہا کہ تمام چیلنجز کے لئے قومی اورمتفقہ ردعمل ضروری ہے، پاکستان ہرمذہب اورنظریات کےحامی پاکستانیوں کا ہے.

Rawalpindi – June 14, 2018No PR-200/2018-ISPRChief of Army Staff (COAS) General Qamar Javed Bajwa visited National Defence University today. While addressing the participants of National Security and War Course, COAS congratulated them on successful completion of the course. COAS’ address focused on internal and external challenges facing Pakistan.COAS said that Pakistan is fully committed to peace and stability both within and without. Talking about regional peace and development, COAS said that all stake holders need to get out of conflict paradigm as only cooperative framework can unlock the true potentials of the region. For this Pakistan has done its part in tackling the security challenges which seemed insurmountable a few years ago. Talking about internal challenges COAS said that we have to strive for a Pakistan where rule of law is supreme and where we have the same attitude towards duties as we have towards rights. COAS reiterated that a coordinated and committed national approach is effective response to all challenges. Pakistan belongs to all Pakistanis regardless of beliefs or opinions, COAS remarked. Talking about Hybrid War COAS said that it’s the National will which is targeted in such war. For effective counter and response to hybrid war there is a need that national issues having impact on our national security like economy, education, water security and national integration etc must take precedence through relevant national institutions, COAS concluded.

Posted by Maj Gen Asif Ghafoor on Thursday, June 14, 2018


ابھی کام مکمل نہیں ہوا، مزید منزلیں طے کرنی ہیں، آرمی چیف


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں