site
stats
اہم ترین

خیبر ایجنسی: آرمی چیف وادی راجگال پہنچ گئے

خیبر ایجنسی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ خیبر ایجنسی کی وادی راجگال پہنچ گئے جہاں انہیں آپریشن راجگال کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے سربراہ میجر جنرل آصف غفور کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ خیبر ایجنسی کی وادی راجگال پہنچے۔

اس موقع پر کور کمانڈر پشاور لیفٹیننٹ جنرل نذیر احمد بٹ اور آئی جی ایف سی میجر جنرل شاہین مظہر محمود بھی ان کے ساتھ تھے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف کو آپریشن راجگال سے متعلق بریفنگ دی گئی۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ راجگال کا 90 فیصد علاقہ کلیئر کر دیا گیا ہے۔

اس موقع پر آرمی چیف کا کہنا تھا کہ پاکستان میں حالات بہتری کی جانب گامزن ہیں۔ ریاست کی عملداری بحال ہو رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ قانون کی بالادستی یقینی بنائی جا رہی ہے۔ وادی راجگال میں دہشت گردوں کے کئی ٹھکانے تباہ کر دیے گئے ہیں۔

آرمی چیف کا کہنا تھا کہ خیبر ایجنسی کو جلد دہشت گردوں سے پاک کروا دیں گے۔ ریاستی عملداری اور قانون کی بالا دستی پر کوئی دو رائے نہیں۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ پاک فوج قوم کی امیدوں پر پورا اتر رہی ہے۔ قوم کے تعاون سے شدت پسندی اور دہشت گردی ختم کردیں گے۔

آرمی چیف نے نقل مکانی کرنے والے مقامی لوگوں کی واپسی کے لیے بھی اقدامات کرنے کی ہدایت کی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے آپریشن میں پاک فضائیہ کے تعاون کو سراہتے ہوئے کہا کہ پاک فضائیہ کے تعاون سے دہشت گردوں کو مؤثر انداز میں نشانہ بنایا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق خیبر ایجنسی کا راجگال کا علاقہ 12 سے 14 ہزار فٹ کی بلندی پر ہے اور یہ فاٹا کا مشکل علاقہ ہے۔ 250 کلو میٹر راجگال میں 8 گزر گاہیں ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق راجگال آپریشن زمینی حقائق کے تناظر میں مشکل ہے، اس کی سرحد افغانستان سے متصل ہے۔ آپریشن راجگال کا مقصد داعش کو پاکستان آنے سے روکنا ہے۔


Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top