The news is by your side.

Advertisement

چائے اور کافی پینے کا ایک بڑا فائدہ، طبی محققین کا نیا انکشاف

طبی محققین نے انکشاف کیا ہے کہ چائے اور کافی پینے کا فالج اور ڈیمنشیا کی شرح میں کمی سے تعلق ہو سکتا ہے، تحقیق کے دوران دیکھا گیا کہ روزانہ 4 سے 6 کپ کا استعمال ان امراض کے سب سے کم خطرات سے منسلک تھا۔

16 نومبر کو اوپن ایکسیس جریدے PLOS میڈیسن میں شائع ہونے والے 50 سے 74 سال کی عمر کے صحت مند افراد کے تحقیقی مطالعے کے مطابق کافی یا چائے پینا فالج اور ڈیمنشیا کے کم خطرے سے منسلک ہو سکتا ہے، جب کہ کافی پینے کا تعلق فالج کے بعد کے ڈیمنشیا کے کم خطرے سے بھی منسلک دیکھا گیا۔

محققین نے کہا کہ چائے یا کافی پینے کی عادت فالج اور دماغی تنزلی کے مرض ڈیمینشیا کے خطرے کو کم کر سکتی ہے، اس حوالے سے 3 لاکھ 65 ہزار سے زیادہ رضاکاروں پر چین کی تیان جن میڈیکل یونیورسٹی میں تحقیق کی گئی۔ ان رضاکاروں کی خدمات 2006 سے 2010 تک حاصل کی گئیں اور 2020 تک ان کی مانیٹرنگ کی گئی۔

فالج ایک جان لیوا واقعہ ہے جو عالمی سطح پر 10 فی صد اموات کا سبب بنتا ہے، ڈیمنشیا دماغی افعال میں تنزلی سے متعلق علامات کے لیے ایک عام اصطلاح ہے، اور یہ عالمی صحت کا ایک مسئلہ ہے جو ایک بھاری معاشی، سماجی بوجھ کا سبب بنتا ہے، جب کہ پوسٹ اسٹروک ڈیمنشیا (فالج کے بعد دماغی تنزلی) ایک ایسی حالت ہے جس میں فالج کے بعد ڈیمنشیا کی علامات ظاہر ہوتی ہیں۔

اسٹڈی میں شامل رضاکاروں نے کافی اور چائے کے استعمال کو خود رپورٹ کیا، اس دوران 5 ہزار 79 افراد ڈیمینشیا اور 10 ہزار 53 کو کم از کم ایک بار فالج کا سامنا ہوا۔

جو رضاکار روزانہ 2 سے 3 کپ کافی یا 3 سے 5 کپ چائے پیتے تھے، یا ملاکر 4 سے 6 کپ کافی اور چائے پیتے تھے، ان میں فالج یا ڈیمنشیا کے سب سے کم واقعات رپورٹ ہوئے۔

جو لوگ روزانہ 2 سے 3 کپ کافی اور 2 سے 3 کپ چائے پی رہے تھے، ان میں فالج کا خطرہ 32 فی صد کم تھا، اور ڈیمنشیا کا خطرہ 28 فی صد کم رہا، ان لوگوں کے مقابلے میں جو نہ کافی پیتے تھے نہ چائے، اکیلے کافی کا استعمال یا چائے کے ساتھ ملا کر بھی فالج کے بعد ڈیمنشیا کے کم خطرے سے وابستہ تھا۔

یاد رہے کہ اس تحقیق میں اس کی وجہ پر روشنی نہیں ڈالی گئی، کہ چائے یا کافی سے فالج اور ڈیمنشیا کا خطرہ کیوں کم ہو جاتا ہے۔ اس سے قبل 2018 میں آسٹریلیا کے الفریڈ ہاسپٹل کی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ چائے یا کافی پینے کی عادت دل کی دھڑکن کی بے ترتیبی اور فالج کا خطرہ کم کرنے میں مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ چائے یا کافی میں موجود کیفین مرکزی اعصابی نظام کو حرکت میں لاکر ایڈی نوسین نامی کیمیکل کے اثرات کو بلاک کرتا ہے جو کہ atrial fibrillation (بے قاعدہ اور اکثر بہت تیز دل کی دھڑکن، جس کی وجہ سے دل میں خون جم جاتا ہے) کا باعث بنتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں