site
stats
سائنس اور ٹیکنالوجی

دنیا بھرکے کمپیوٹرز کو ہولناک سائبر حملے کاخطرہ

انٹرنیٹ سے منسلک دنیا بھر کےکروڑوں کمپیوٹرز ایک ہولناک سائبر حملے کا نشانہ بن سکتے ہیں۔ کمپیوٹر کو مفلوج کرکے تاوان کا مطالبہ کرنے والے وائرس سے بینک، اسپتال، اسکول، دفاتر ،گھر کوئی محفوظ نہیں۔

وانا کرائے نامی وائرس دنیا بھر کے کمپیوٹرزپردوسرے حملے کے لئے تیار ہے، جمعے کو یہ وائرس جنگل کی آگ کی طرح 150 سے زائد ممالک میں کمپیوٹر سسٹمز میں پھیل گیا تھا۔

کمپیوٹروں کو مفلوج کرکے یہ وائرس تاوان کی رقم کا مطالبہ کرتا ہے۔ ایک اندازے کے مطابق سائبر حملے میں دو لاکھ سے زائد کمپیوٹر متاثر ہوئے۔ ایک برطانوی نوجوان نے اتفاق سے اس حملے کو روک دیاتھا۔

ماہرین کے مطابق اس وائرس کے دوسرے ورژن اب بھی کئی کمپوٹروں میں موجود ہیں۔ خاص طور پر پرانے کمپویٹر اس کانشانہ ہیں۔ سائبر سیکیورٹی سے وابستہ کمپنیاں ابھی تک کسی حتمی حل تک نہیں پہنچ سکیں۔

ماہرین کے مطابق اگر دوسرا حملہ ہوا تو بہت نقصان ہوگا۔ کمپیوٹر سافٹ ویئراورمصنوعات بنانے والی عالمی کمپنی مائیکروسافٹ کا کہنا ہے کہ جمعے سے ہونے والے سائبر حملے کو خواب غفلت سے بیدار ہونے کے کے لیے انتباہ کے طور پر دیکھا جانا چاہئیے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top