site
stats
پاکستان

نواز شریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست ناقابل سماعت قرار

لاہور: ہائی کورٹ نے نواز شریف کے عدلیہ مخالف بیانات میڈیا پر نشر کرنے سے روکنے اور توہین عدالت کی درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دیا۔

درخواست کی سماعت جسٹس مامون الرشید شیخ نے کی، درخواست گزار محمد شاہد رانا نے موقف اختیار کیا کہ سپریم کورٹ کے 5 ججز نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو نااہل قرار دیا ہے، نااہلی کے بعد نواز شریف نے اسلام آباد سے لاہور تک ریلی میں عدلیہ مخالف تقاریر کیں۔

درخواست گزار کے مطابق سابق وزیر اعظم نے عدلیہ کے خلاف عوام کو اکسانے کی کوشش کی، انھوں نے عدلیہ کے متعلق جو بیانات دیے وہ توہین عدالت کے زمرے میں آتے ہیں لہذا نواز شریف کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی کی جائے جب کہ عدالت پیمرا کو نوازشریف کے میڈیا پر بیانات نشر کرنے پر بھی پابندی لگانے کا بھی حکم دے۔

سرکاری وکیل نے بیان دیا کہ درخواست ناقابل سماعت ہے اس لیے مسترد کی جائے ۔

عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ معاملہ سپریم کورٹ میں تو ہائی کورٹ کس طرح کارروائی کر سکتی ہے عدالت نے وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے دیا۔

یاد رہے کہ گذشتہ سماعت میں عدالت نے درخواست گزار کے وکیل کو مزید تیاری کے ساتھ عدالت پیش ہونے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 18 اگست تک ملتوی کردی تھی۔


مزید پڑھیں : توہین عدالت کیس، نواز شریف سمیت 14 مسلم لیگی رہنماؤں کو نوٹس جاری


قبل ازیں عدالت نے درخواست کی ابتدائی سماعت کے لیے میاں نواز شریف، خواجہ آصف، خواجہ سعد رفیق، رانا ثناء اللہ، دانیال عزیز سمیت فریقین کو 25 اگست کے لیے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top