The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو سے اشیائے ضروریہ کی شدید قلت

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں پانچویں روز بھی عوام گھروں میں محصور ہیں، مسلسل کرفیو سے مقبوضہ وادی میں اشیائے ضروریہ کی شدید قلت ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں پانچ دن کے دوران سیکڑوں کارکن اور کشمیری رہنماؤں کو گرفتار کیا جاچکا ہے، قابض فوج نے کشمیری عوام کو نماز جمعہ ادا کرنے کی اجازت بھی نہیں دی۔

رپورٹ کے مطابق علی گیلانی، میرواعظ سمیت تمام حریت رہنما گھروں اور جیلوں میں نطر بند ہیں، مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ پانچ روز سے اخبارات بھی شائع نہیں ہوسکے ہیں۔

مقبوضہ علاقے کا بیرونی دنیا سے ہرطرح کا مواصلاتی رابطہ مکمل طور پر منقطع ہوگیا ہے، بچوں کے لیے دودھ، بیماروں کے لیے دوائیں ناپید ہوگئی ہیں۔

مزید پڑھیں: مقبوضہ کشمیر، 24سے زائد حریت کارکنوں کو گرفتار کر کے آگرہ منتقل کردیا

واضح رہے کہ گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے علاقے نور باغ میں بھارتی فوج نے بے گناہ نوجوان کو شہید کردیا تھا جس کے بعد علاقہ مکینوں نے فوج کے خلاف شدید احتجاج کیا تو انہیں منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کی گئی تھی۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی سمیت 500 سے زائد بے گناہ کشمیریوں اور رہنماؤں کو مختلف علاقوں سے حراست میں لیا تھا۔

کٹھ پتلی انتظامیہ نے علاقوں میں انٹرنیٹ اور ٹی وی سروس بھی بند کردی جبکہ مقامی یا غیرملکی صحافیوں کو بھی مقبوضہ وادی میں جانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں