The news is by your side.

Advertisement

لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والے کورونا مریض کوعدالت نے سزا سنا دی

ہنوئے : دنیا بھر میں کورونا وائرس پوری طرح پھیل چکا ہے جس کے نتیجے میں مختلف ممالک کی معیشت اور عوامی صحت کے معاملات بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔

وباء کو بڑھنے سے روکنے کیلئے ویتنام کی عدالت نے پھیلاؤ کے ذمہ داران کو سخت سزا دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے ایک شخص کو 5 سال قید کی سزا سنا دی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ویتنام کے شہری 28 سالہ لی وان ٹری نے گھر میں قرنطینہ کرنے کے قانون کی خلاف ورزی کی جس کے بعد اسے لوگوں میں خطرناک بیماریاں پھیلانے کے جرم میں سزا سنائی گئی۔

رپورٹ کے مطابق لی وان ٹری نے ملک میں کورونا وائرس کے گڑھ ہو چی من سٹی سے اپنے آبائی صوبےکاماؤ گیا، جس کی وجہ سے وہ کورونا وائرس مزید پھیلنے کی وجہ بنا۔

کاماؤ میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد ہو چی من سٹی کے مقابلے میں کم ہے اور صوبے میں 21 دن تک گھر میں قرنطینہ کرنا لازمی قرار دیا گیا ہے تاہم مذکورہ شخص نے اس قانون کی خلاف ورزی کی۔ لی وان ٹری میں کورونا وائرس کی تصدیق 7 جولائی کو ہوئی تھی۔

عدالتی رپورٹ کے مطابق لی وان ٹری نے گھر میں قرنطینہ کرنے کے طبی قانون کی خلاف ورزی کی جس کی وجہ سے کئی لوگ کورونا وائرس کا شکار ہوئے جس کے باعث 7 اگست2021 کو ایک شخص کا انتقال بھی ہوا۔

سرکاری میڈیا کے مطابق لی وان ٹری کی وجہ سے 8 لوگ کورونا وائرس سے متاثر ہوئے۔ واضح رہے کہ ویتنام میں کورونا کے تیزی سے پھیلاؤ کے باعث دارالحکومت ہنوئے اور ہوچی من سٹی میں گذشتہ کئی مہینوں سے سخت لاک ڈاؤن لگا ہوا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں