The news is by your side.

Advertisement

کورونا وائرس : سپر اسٹور میں لاکھوں مالیت کی چیزیں چاٹنے والی امریکی خاتون گرفتار

کیلیفورنیا : امریکا کے ایک سپر اسٹور میں خاتون کو 1 ہزار 800 ڈالر مالیت کی اشیا کو چاٹنے پر ان اشیاء کو ناقابل فروخت قرار دے کر حراست میں لے لیا گیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست کیلی فورنیا کے سپراسٹور میں 53 سالہ خاتون گاہک نے 1800 ڈالر کی خریداری سے قبل تمام اشیا کو چاٹا جس پر دکاندار نے پولیس کو طلب کرلیا، پولیس نے مذکورہ خاتون کو کورونا وائرس پھیلانے کے الزام میں گرفتار کرلیا۔

خاتون کی جانب سے مہنگی چیزوں کو چاٹنے کا واقعہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا جب کہ پہلے ہی امریکا کے تمام اسٹورز اور شاپنگ مالز میں کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلاؤ کے پیش نظر سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں

دکاندار نے خاتون کی جانب سے چاٹی گئی تمام اشیا کو ناقابل فروخت قرار دیکر ان اشیا کا بل خاتون کے کھاتے میں لکھ دیا، خاتون نے 10ہزار امریکی ڈالر کے عوض ضمانت بھی حاصل کرلی تاہم 53 سالہ جینیفر واکر کیخلاف مقدمہ جاری رہے گا۔

امریکا میں پہلے ہی کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں جس کے تحت شاپنگ مالز، اسٹورز اور عام گھریلو استعمال کی چیزوں کی دکانوں پر بیمار شخص کے آنے اور وہاں چھینکنے سمیت کسی بھی شخص کی جانب سے کوئی مشتبہ حرکت کیے جانے کے بعد چیزوں کو ضائع کیا جانا بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی گزشتہ ماہ 27 مارچ کو بھی امریکی ریاست نیوجرسی کے ایک سپر اسٹور نے خاتون کی جانب سے غذائی اشیا کے قریب چھینکنے اور کھانسنے پر تقریبا 56 لاکھ روپے مالیت کی اشیاء تلف کر دی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں