The news is by your side.

Advertisement

چکن وِنگز میں کرونا وائرس کی موجودگی کا انکشاف

بیجنگ: برازیل سے چین میں درآمد ہونے والے چکن وِنگز میں کرونا وائرس کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق چین کا کہنا ہے کہ برازیل سے آئے چکن وِنگز میں کرونا وائرس پایا گیا ہے، جب چکن وِنگز سے لیے گئے سیمپل کا کرونا ٹیسٹ کرایا گیا تو نتیجہ مثبت آیا۔

جمعرات کو سامنے آنے والے اس معاملے نے نئے خدشات کھڑے کر دیے ہیں، چین کے شہر شینزن کے حکام کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس برازیل سے منگوائے گئے فروزن چکن وِنگز کے ایک دستے میں پایا گیا ہے، جس سے فروزن فوڈ کے جراثیم سے آلودہ ہونے کا معاملہ ایک بار پھر زیر بحث آ گیا ہے، اس سے قبل جون میں بیجنگ میں منجمد کی گئی سالمن مچھلی میں بھی کرونا وائرس نکلا تھا۔

تاہم ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ فوڈ اور فوڈ پیکجنگ کے ذریعے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔

شینزن میں واقع ضلع لونگانگ کی انتظامیہ نے ایک بیان میں کہا کہ درآمد شدہ فروزن فوڈ کی جانچ کے دوران چکن وِنگز کی سطح سے لیے گئے سیمپلز میں کرونا وائرس موجود پایا گیا۔

حکام نے کرونا وائرس سے آلودہ چکن وِنگز کے برانڈ کا نام ظاہر نہیں کیا، تاہم مذکورہ برانڈ کی دیگر مصنوعات کا پتا لگایا جا رہا ہے جنھیں کمپنی فروخت کر چکی ہے۔ جس علاقے میں چکن وِنگز کو اسٹور کیا گیا تھا اسے بھی اسپرے کر کے جراثیم سے پاک کیا جا رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق شینزن ہیلتھ افسران نے ان لوگوں کا بھی فوری طور پر پتا لگا لیا ہے کہ جو ان چکن وِنگز سے رابطے میں آئے تھے، جب ان کا کرونا ٹیسٹ کیا گیا تو وہ سب نیگیٹو آئے۔

دوسری طرف ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ اس بات کا امکان بہت کم ہے کہ لوگوں کو کھانے کی چیزوں یا ان کی پیکنگ کی وجہ سے کرونا وائرس انفیکشن ہو جائے۔ سی ڈی سی نے بیان دیا ہے کہ کھانے کی چیزوں، ان کی پیکنگ یا تھلوں کی وجہ سے وائرس انفیکشن ہونے کا امکان بہت ہی کم مانا جاتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں