The news is by your side.

Advertisement

کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے ایک اور نیا طریقہ دریافت

لندن : یوں تو کورونا وائرس سے محفوظ رہنے اور اس کے علاج کیلئے دنیا بھر میں کوئی نہ کوئی تحقیق یا ٹوٹکے بتائے جارہے ہیں ایک ایسی ہی تحقیق میں وائرس سے بچنے کیلئے ایک اور نیا طریقہ سامنے آیا ہے۔

برطانیہ میں کورونا وائرس سے بچانے والا اسپرے تیار کر لیا گیا ہے جسے ناک میں ڈالا جائے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سائنسدانوں نے ناک میں ڈالے جانے والے اسپرے کو فوکس ویل کا نام دیا ہے جو کورونا وائرس کے چنگل میں آسانی سے آجانے والے افراد کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔

اس اسپرے کو بھارت میں 600 تندرست ایسے طبی کارکنان پر آزمایا گیا ہے جو کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج میں مدد کر رہے تھے۔ ناک کے دونوں نتھنوں میں ایک مرتبہ اسپرے کرنے کے بعد یہ 8 گھنٹے تک کسی وائرس کے حملے کو محفوظ رکھتا ہے۔

اسپرے کو تیار کرنے والے برطانوی سرجن اور اسٹارٹ اپ کے سربراہ راکیش اوپل نے اپنی ایجاد کو ایک سنگ میل قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگرچہ ویکسین ہی اس وبا سے سب سے مؤثر تحفظ فراہم کرتی ہے تاہم انہوں نے اس ناک کے اسپرے کو حفاظتی لباس جیسا اہم قرار دیا ہے۔

ابتدائی تجربات سے انکشاف ہوا کہ ایک اسپرے کا اثر 8 گھنٹوں تک رہتا ہے اور اسپرے کی افادیت 66 فیصد ظاہر ہوئی یعنی 66 فیصد افراد کورونا کی وبا سے محفوظ رہے۔

آکسفورڈ یونیورسٹی کی پروفیسر اینجیلا رسل نے کورونا وائرس روکنے والے ناک کے اسپرے کو ایک اہم ایجاد قرار دیا۔ اگرچہ وہ اس تحقیق اور ایجاد کا حصہ نہیں رہیں لیکن انہوں نے کہا کہ یہ اسپرے دنیا کو دوبارہ اپنے پیروں پر کھڑا کرسکتا ہے۔

ڈاکٹر راکیش کے مطابق اس چھوٹے سے اسپرے کو اپنے بیگ میں رکھا جاسکتا ہے اور دن میں کئی بار استعمال کرنا بہت آسان ہوجاتا ہے۔ ان کے مطابق اسپرے میں شامل طاقتور ترین اجزا کورونا وائرس کو صرف 30 سیکنڈ میں تباہ کر دیتے ہیں اور ناک کے اندر کئی گھنٹے تک موجود رہتے ہیں۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں