The news is by your side.

Advertisement

کورونا سے کروڑوں افراد انتہائی غریب ہوجائیں گے، عالمی بینک نے خبردار کردیا

واشنگٹن : عالمی بینک نےخبردار کیا ہے کہ کورونا کےعالمی معیشت پر منفی اثرات کے باعث چھ کروڑ افراد انتہائی غربت کی سطح پر پہنچ جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق عالمی بینک کی رپورٹ میں بتایاگیاہےکہ تمام ممالک کی معیشت پر کورونا کے منفی اثرات نمایاں ہوئےہیں، جس کے باعث رواں سال عالمی سطح پر انتہائی غربت کی شرح نو فیصد تک پہنچ جانےکا خدشہ ہے۔

عالمی بینک کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس نےپانچ سال کےثمرات کوذائل کردیا، اس سال اقتصادی ترقی کی شرح پانچ فیصدکم ہونےکاامکان ہے، وائرس کی وجہ سےپہلےہی لاکھوں لوگ بیروزگارہوچکےہیں اورکاروباربند ہورہےہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ انتہائی غربت کامطلب ایسےافرادہیں جن کہ یومیہ آمدنی ایک ڈالر نوےسینٹ سےکم ہو جبکہ تین ڈالربیس سینٹ یومیہ کمانےوالوں کی تعدادمیں تئیس فیصد اضافہ متوقع ہے، جس کے بعد عالمی سطح پرغربت کےشکارافرادکی تعدادپندرہ کروڑہوجائےگی۔

رپورٹ کے مطابق دنیابھرکےدوتہائی غریب افراد کمزرواورتنازعوں کاشکارمعیشتوں والےممالک میں رہائش پزیرہیں اور ذیادہ تر زرعی شعبےسےوابستہ ہیں۔

عالمی بینک کےصدرڈیوڈمیلپاس نے کہا کہ دنیا بھرمیں اس وقت لاکھوں لوگوں کا روزگارختم ہوچکاہےاورصحت کےنظام پرشدید دباؤہے، عالمی بینک غریب ممالک کورواں سال کےآخرتک قرضوں کی ادائیگی میں ریلیف فراہمی کیلئےآئی ایم ایف کےساتھ مل کرکام کر رہا ہے۔

خیال رہے دنیا بھر میں متاثرین کی تعداد پچاس لاکھ سے تجاوز کر گئی  جبکہ ساڑھے تین لاکھ افراد جان سے گئے، عالمی ادارہ صحت کے مطابق سب سے زیادہ مریض امریکہ ، روس، برازیل اور برطانیہ میں ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی عالمی وبا یورپ اور ایشیا میں کم ہوتی دکھائی دے رہی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں