The news is by your side.

Advertisement

بینظیر بھٹو شہید یوتھ ڈیولپمنٹ پروگرام میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف

کراچی : بینظیر بھٹو شہید یوتھ ڈیولپمنٹ پروگرام میں کروڑوں روپے کی کرپشن کاانکشاف ہوا ، جس کے بعد کرپشن میں ملوث دوافسران کو گرفتار کرلیا گیا ، ملزمان نے صرف کراچی میں3 کروڑ 87 لاکھ کی خوردبرد کی۔

تفصیلات کے مطابق بینظیر بھٹو شہید یوتھ ڈیولپمنٹ پروگرام میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف سامنے آیا، کرپشن آئی ٹی برانچ کے ذریعے سندھ کے تمام ڈسٹرکٹس میں کی گئی۔

ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کا کہنا ہے تحقیقات کے دوران متعدد یوتھ ڈیولپمنٹ مراکز صرف کاغذات میں پائے گئے،تحقیقات کے نتیجے میں بی بی ایس وائی ڈی میں کروڑوں روپے کی خوردبرد سامنے آئی ہے  بدعنوانی میں ملوث دو افسران کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا ہے،  ملزمان نے صرف کراچی میں 3 کروڑ  87 لاکھ کی خوردبردکی۔

ضمیر عبا سی کے مطابق گرفتارملزمان میں ڈسٹرکٹ ایسٹ اور ویسٹ انچارج فیصل انصاری اور مینجر آئی ٹی برانچ بینظیربھٹوشہید یوتھ ڈیویلپمنٹ پروگرام ارسلان شامل ہیں جبکہ سندھ کے دیگر اضلاع کی جانچ چل رہی ہے۔

ڈپٹی ڈائریکٹر کے مطابق صوبے کے 17 اضلاع میں تربیت دینے والے اساتذہ، زیرتربیت افراد کے نام پر خوردبرد کی جارہی تھی اور یہ خوردبرد پروگرام کے ڈسٹرکٹ افسران گھوسٹ مراکز کے مالک پرائیویٹ افسران کے ذریعے کر رہے تھے اس ضمن میں فراڈ کیلئے مختلف افراد کے قومی شناختی کارڈ جمع کیے جاتے تھے اور انہیں تربیت کیلئے انرولڈ ظاہر کیا جاتا تھا۔

ڈپٹی ڈائریکٹراینٹی کرپشن کا کہنا تھا کہ پروگرام میں ہرطالبعلم کاوظیفہ 2500 روپےمقرر کیاگیا ، سندھ میں ہزاروں کی تعداد میں طلبارجسٹرتھے جبکہ ڈیولپمنٹ پروگرام میں 87 فیصد طلباء جعلی نکلے۔

خیال رہے وا ضح رہے کہ گرفتار ملزم فیصل انصاری کراچی ایسٹ کا مینجر ہے، جس کے پاس ضلع ویسٹ کا اضافی چارج بھی ہے،خر د بر د کے حوالے سے ملزمان کو عدالت میں پیش کر کے ان کا جسمانی ریمانڈ لیا جائے گا جبکہ دیگر اضلاع میں بھی ملزمان کی گرفتاری کیلئے خصوصی ٹیمیں روانہ کی جائیں گی۔

مزید پڑھیں : اربوں روپے کی کرپشن، ڈی ایم سی ملیر کے دفتر سے اہم ریکارڈ مل گیا

یاد رہے رواں ماہ کے آغاز میں اینٹی کرپشن ایسٹ نے ڈی ایم سی ملیر کراچی کے دفتر پر چھاپہ مارکر اربوں روپے کرپشن کا ریکارڈ حاصل کرلیا تھا، اس حوالے سے ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ضمیرعباسی کا کہنا تھا کہ محکمہ میں ڈھائی سال کے دوران اربوں روپے کی کرپشن کی گئی، صرف الیکٹریکل اور تعمیراتی کام کی مد میں ایک ارب30کروڑ روپے کی کرپشن کی گئی۔

اس کے علاوہ جعلی بلوں کے ذریعے90کروڑ روپے کا غبن کیا گیا ،ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کے مطابق680گھوسٹ ملازمین کی تعیناتی بھی کی گئی ہے، ٹیکسیشن ڈپارٹمنٹ میں72کروڑ روپے کی کرپشن کی گئی، گاڑیوں کی مرمت ودیگر مد میں41کروڑ روپے کی کرپشن کی گئی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں