حقوق نسواں بل میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں، مولانا شیرانی -
The news is by your side.

Advertisement

حقوق نسواں بل میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں، مولانا شیرانی

لاہور: چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل مولانا محمد خان شیرانی نے کہا ہے کہ حقوق نسواں بل میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں، یہ صرف اسلام کے سیاسی کردار کو مسخ کرنے کا ایجنڈا ہے۔

لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد شیرانی نے کہا کہ خیبر پختونخوا اور پنجاب حکومت کے علیحدہ علیحدہ قوانین کا اسلامی نظریاتی کونسل اپنے اجلاس میں بغور جائزہ لیا اور تمام مکتب فکر کے علماءنے ان دونوں کو مسترد کر دیا ہے۔

وزیر قانون رانا ثناءاللہ کی طرف سے خط موصول ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومت پر واضح کردیا ہے کہ نام کا بل ہے مگر اندر کچھ بھی نہیں ہے اس کو قانون کی شکل نہیں دی جا سکتی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہماری کسی سے کوئی عداوت نہیں اپنا آئینی کام کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسلامی نظریاتی کونسل ایک آئینی ادارہ ہے سیاسی نہیں ، حکومت آئین کے آرٹیکل 229کے تحت اگر ناموس رسالت قانون اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجے تو بتا سکتے ہیں کہ ہم کیا کر سکتے ہیں۔

مولانا محمد خان شیرانی کا کہنا تھا کہ جب حکومت عوام کی ترجمان نہیں ہوتی اور اسے صرف اپنا اقتدار نظر آتا ہے تو وہ عوام کو آپس میں لڑاتی ہے حکومت کی ذمہ داری ہے کہ خاندان کے تحفظ کے لیئے قانون سازی کرے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں