The news is by your side.

Advertisement

ریکارڈ ٹیمپرنگ کیس: ظفر حجازی کے جسمانی ریمانڈ میں 3 روز کی توسیع

اسلام آباد: چوہدری شوگر مل کے ریکارڈ میں ردو بدل کرنے کے الزام میں سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن پاکستان (ایس ای سی پی) کے معطل شدہ چیئرمین ظفر حجازی کے ریمانڈ میں مزید 3 روز کی توسیع کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ایف آئی اے نے 4 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے کے بعد ایس ای سی پی کے سابق چیئرمین کو مقامی عدالت میں پیش کیا۔

ایف آئی اے نے 4 روزہ جسمانی ریمانڈ کے دوران سامنے آنے والی تحقیقات کی رپورٹ عدالت میں پیش کرتے ہوئے عدالت سے مزید 8 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔

تاہم ظفر حجازی کے وکیل نے اپنے مؤکل کی خراب صحت کا حوالہ دیتے ہوئے مزید ریمانڈ کی مخالفت کی۔

سماعت کے اختتام پر عدالت نے ظفر حجازی کے ریمانڈ میں 3 روز کی توسیع کرتے ہوئے انہیں ایف آئی اے کے حوالے کردیا۔ ملزم کو 29 جولائی کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا گیا۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے عدالت نے ظفر حجازی کو 4 روزہ ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کیا تھا۔

اس سے قبل ظفر حجازی نے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کر رکھی تھی تاہم عدالت نے ان کی ضمانت منسوخ کردی اور انہیں کمرہ عدالت سے گرفتار کرلیا گیا۔

خیال رہے کہ چند روز قبل ایس ای سی پی کے 3 افسران علی عظیم اکرم، عابد حسین اور ماہین فاطمہ نے ایف آئی اے کے روبرو چوہدری شوگر ملز کے ریکارڈ میں ٹیمپرنگ کا اعتراف کیا تھا۔

مزید پڑھیں: ظفر حجازی کی دفتر آمد، ریکارڈ ضائع کرنے کا خدشہ

ان کا کہنا تھا کہ یہ کام انہوں نے چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کے ایما پر کیا۔ چیئرمین کی جانب سے چوہدری شوگر ملز کیس کی فائل بند کرنے کے لیے سخت دباؤ تھا، اور حکم عدولی پر انہوں نے مذکورہ افسران کو گلگت بلتستان سمیت دور دراز علاقوں میں تبادلوں کی دھمکی دی تھی۔

ریکارڈ ٹیمپرنگ کا انکشاف سامنے آنے کے بعد سپریم کورٹ نے چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے اور تحقیقات کا حکم دے دیا۔


Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں