The news is by your side.

Advertisement

ڈاکٹر عامر لیاقت کی موت طبعی تھی یا قتل کیا گیا ؟ بڑی خبر آگئی

کراچی : عدالت نے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت کا پوسٹ مارٹم کرانے کا حکم دے دیا ، عامرلیاقت کے پوسٹ مارٹم کے لیے قبر کشائی کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت کے پوسٹ مارٹم سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی۔

بیرسٹرراجہ ارسلان مقدمےمیں درخواست گزارکی جانب سےپیش ہوئے، وکیل درخواست گزار نے کہا کہ عامرلیاقت کی وجہ موت کا تعین ضروری ہے۔

جس پر سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ ورثا پوسٹ مارٹم کرانا نہیں چاہتے ، ورثا کےمطابق پوسٹ مارٹم سےوالد صاحب کی روح کو تکلیف ہوگی، ورثا کہتے ہیں ہمیں کسی پر شک بھی نہیں ہے۔

پولیس رپورٹ میں کہا گیا کہ جسم کا اندرونی جائزہ لئے بغیر وجہ موت کا تعین نہیں ہو سکتا، عدالت نے دلائل سننے کے بعد رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت کے پوسٹ مارٹم کی درخواست منظور کرلی۔

عدالت نے پولیس کو احکامات پر عمل کرانے کی ہدایت بھی کردی ، عامرلیاقت کے پوسٹ مارٹم کے لیے قبر کشائی کی جائے گی۔

یاد رہے درخواست گزار عبدالاحد نے کہا تھا کہ عامر لیاقت کی اچانک پراسرار موت ہوئی ہے، وہ معروف شخصیت ہیں، وجہ موت کا تعین ضروری ہے۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ عامر لیاقت کی اچانک موت سے ان کے مداحوں میں شکوک و شبہات ہیں، شبہ ہے عامر لیاقت کو جائیداد کے تنازعے ہر قتل کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں : ‘عامر لیاقت کی اچانک پراسرار موت ، جائیداد کے تنازع پر قتل کا شبہ 

واضح رہے کہ عامر لیاقت حسین 9 جون کو اچانک انتقال کر گئے تھے ، وہ اپنے گھر میں مردہ پائے گئے تھے،جس کے بعد انہیں اسپتال منتقل کیا گیا ، جہاں ڈاکٹروں کی ان کی موت کی تصدیق کی تھی تاہم عامر لیاقت کے اہلخانہ نے پوسٹ مارٹم سے انکار کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں