The news is by your side.

Advertisement

بیوی پر تشدد اور سر مونڈنے والے شوہر کی درخواست ضمانت خارج

لاہور : لاہور میں بیوی پر تشدداور سرمونڈنے والے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی گئی ، ملزم میاں فیصل نے اپنی بیوی اسماکو دوستوں کے سامنے ڈانس نہ کرنے پرتشدد کا نشانہ بنایا تھا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کی مقامی عدالت میں جوڈیشل مجسٹریٹ شاہد ضیاء نے بیوی پر تشدد اور سر مونڈنے کے ملزمان کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

ملزمان کی جانب سے استدعا کی گئی کہ مقدمہ میں دفعات قابل ضمانت ہیں، عدالت ضمانت پر رہا کرے۔

مدعیہ کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ ملزم میاں فیصل نے اپنی بیوی اسما عزیز کو تشدد کا نشانہ بنایا تھا، ملزم نے دوستوں کے سامنے ڈانس نہ کرنے پر بیہمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور سر کے بال مونڈھ ڈالے۔

متاثرہ خاتون نے بیان دیا کہ فیصل 24 مارچ کو دو دوستوں کے ساتھ گھر میں داخل ہوا اور نشے کی حالت میں تھا، شوہر نے اسے بھی شراب پینے کا کہا لیکن اس نے انکار کیا، دوستوں کے چلے جانے کے بعد شوہر نے پانی کے پائپ سے پاؤں باندھ کر تشدد کیا، استدعا ہے کہ عدالت ملزمان کی درخواست ضمانت خارج کرنے کا حکم دے۔

دلائل کے بعد جوڈیشل مجسٹریٹ نے ملزم فیصل اور راشد کی درخواست ضمانت خارج کر دی۔

 

مزید پڑھیں : لاہور، رقص نہ کرنے پر خاتون پر شوہر کا تشدد، شیریں مزاری کا نوٹس، شوہر اور ملازم گرفتار

یاد رہے اسماکے شوہر نے بہیمانہ تشدد کے بعد اس کے بال مونڈھ دیئے تھے، اسما عزیز نے چار سال قبل ملزم فیصل سے پسند کی شادی کی تھی ، وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے نوٹس لیا، جس کے بعد پولیس نے،  خاتون کے شوہر سمیت 2 افراد کو گرفتار کرلیا گیا، تھانہ کاہنہ میں واقعے کا مقدمہ درج کرلیا گیا تھا۔

ترجمان آئی جی پنجاب نبیلہ غظنفر کا کہنا تھا کیس کی اعلیٰ سطح پر تحقیقات کی جارہی ہیں، خاتون کے شوہر سمیت2 افراد کوگرفتار کرلیاگیا ہے، گرفتار ملزمان  نے خاتون پر تشدد کا اعتراف کرلیا اور متاثرہ خاتون اس وقت پولیس کی حفاظت میں ہے۔جبکہ وزیرمملکت شہریارآفریدی نے واقعہ کا نوٹس لیا تھا۔

اسماء نے الزام عائد کیا تھا کہ اس کے شوہر فیصل نے چند روز قبل بھی ڈانس سے انکار پر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا، ملازم سے بال کٹوانے والی مشین منگوا کر ملازم کی موجودگی میں اس کا سر بھی مونڈھ ڈالا۔

خاتون کا کہنا تھا شوہر لوگوں کو گھر میں لاتا اور سب کے سامنے رقص کرنے کے لیے دباؤ ڈالتا۔ انکار پر بری طرح مارتا پیٹتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں