منی لانڈرنگ میں ملوث پولٹری دوا ساز کمپنیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاز
The news is by your side.

Advertisement

منی لانڈرنگ میں ملوث پولٹری دوا ساز کمپنیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاز

کراچی  / لاہور: کسٹم انٹیلی جنس نے منی لانڈرنگ اور کسٹم چوری کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے پولٹری میڈیسن درآمد کرنے والی نجی کمپنیوں کے دفاتر سیل کرتے ہوئے تین ملزمان کو گرفتار کرلیا۔

کسٹم انٹیلی جنس ڈائریکڑ علی زیب خان نے لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ نجی دوا ساز کمپنیاں کروڑں کے فراڈ میں ملوث ہیں، ایسے تمام عناصر کے خلاف کارروائی کا آغاز کرتے ہوئے تین ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا۔

کسٹم انٹیلی جنس کے مطابق ملزمان کئی سال سے جعلی دستاویزات اور جعلی ایل سی بنا کر قومی خزانے کو کروڑوں کا نقصان پہنچا رہے تھے، جن کے خلاف انکوائری کے لیے 2011 کا ریکارڈ بھی قبضے میں لیا گیا ہے۔

پڑھیں: ’’ کراچی : چکن پر درآمدی ڈیوٹی ختم کی جائے،پولٹری ایسوسی ایشن کا مطالبہ ‘‘

اُن کا کہنا تھا کہ ملزمان سستی پولڑی میڈسن منگوانے کے لیے تین وفاقی مالیاتی اداروں کو دھوکہ دیتے رہے، گرفتار ملزمان کی شناخت مبشر، شہزاد ، ضیاء الدین کے ناموں سے ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا  کہ  ملزمان سے معروف ائرشپنگ کمپنی کے سینکڑوں جعلی ڈی او لیڑ بھی برآمد ہوئے جبکہ کروڑوں روپے مالیت کی گاڑیاں بھی قبضہ میں لے لی گئی ہیں۔

مزید پڑھیں: ’’ سیلز ٹیکس اور کسٹم ڈیوٹی میں اضافہ مسترد کرتے ہیں، پولٹری ایسوسی ایشن ‘‘

علی زیب خان نے مزید کہا کہ ساڑھے تین کروڑ مالیت کی منی لانڈرنگ صرف ایک ماہ میں کئی گئی، ملزمان کے قبضے سے میزان، حبیب بینک سمیت دیگر بنکوں کی جعلی اسٹیمپ اور ڈی او لیڑ بھی برآمد کیے گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں