The news is by your side.

Advertisement

دل کے عارضے میں مبتلا کرکٹر سے لاہور ایئر پورٹ پر ناروا سلوک

لاہور: دل کے عارضے میں مبتلا لیجنڈ کرکٹر توصیف احمد لاہور ایئرپورٹ پر رل گئے۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ ہفتے دل میں تکلیف کے باعث توصیف احمد کی کامیاب انجیو پلاسٹی کی گئی اور انہیں دو اسٹنٹ ڈالے گئے تھے، اسپتال سے ڈسچارج ہونے کے بعد وہ نیشنل ہائی پرفارمنس سینٹر قیام پزیر رہے۔

آج کراچی روانگی کے وقت دل کے عارضے میں مبتلا کرکٹر اور ان کے اہل خانہ کو شدید کرب کی صورت حال کا سامنا کرنا پڑا، توصیف احمد نے اہلخانہ کے ہمراہ صبح دس پینتالیس لاہور سے کراچی کے لئے روانہ ہونا تھا، توصیف احمد اہل خانہ کے ہمراہ ایئر پورٹ پہنچے تو نجی ایئر لائن سیرین کی جانب سے انہیں آگاہ کیا کہ جہاز میں تکنیکی خرابی کے باعث کچھ تاخیر ہوگئی ہے۔

اس موقع پر کرکٹر توصیف احمد کے بیٹے نے ایئر لائن انتظامیہ کو اپنا اور والد کا تعارف کراتے ہوئے گزارش کی کہ والد صاحب کئی گھنٹوں سے بینچ پر بیٹھنے ہوئے مجبور ہیں، حالیہ آپریشن میں انہیں دو اسٹنٹ لگے ہیں، ڈاکٹرز نے سابق کرکٹر کو آرام کا مشورہ دیا ہوا ہے۔

کرکٹر کے بیٹے ولید نے بتایا کہ تعارف کرانے کے باوجود سیرین ایئر کی انتظامیہ نے کسی قسم کی مدد نہیں کی ، والد کا تعارف اور مسئلہ بتایا تو نامناسب برتاو کیا گیا، انتظامیہ کہتی ہے کہ یہاں مسئلے مسائل ہر ایک کیساتھ ہیں، خدانخواستہ والد کو کچھ ہوگیا تو ذمہ دار کون ہوگا، ایئر لائن انتظامیہ کا دیگر مسافروں کیساتھ بھی اچھا سلوک نہیں ہے۔

کرکٹر توصیف احمد کے بیٹے ولید احمد نے بتایا کہ کراچی پہنچنے کے بعد والد صاحب کو ایک بار پھر چیک اپ ہونا ہے، انتظامیہ کی جانب سے تکنیکی خرابی کا بہانا بنایا جارہا ہے، خدارا واقعے کا نوٹس لیا جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں