The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں رینجرزآپریشن سے دہشت گردی میں 80 فی صد کمی آئی ہے

اسلام آباد : سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق کورینجرز کی جانب سے پیش کردہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ جنوبی افریقہ ، آئرلینڈ اور برطانیہ سے ٹارگٹ کلرز کو فنڈنگ کی جا رہی ہے اس فنڈنگ کو روکنے کیلئے کئی اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

نسرین جلیل کی زیر صدرات قائمہ کمیٹی انسانی برائے انسانی حقوق کا اجلاس میں رینجرز کی جانب سے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں پیش کی گئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آپریشن سے پہلے کراچی پر تشدد شہروں میں چھٹے نمبر پر تھا،سندھ رینجرز نے اختیارات ملنے کے بعد سے کراچی میں 7950 آپریشن کر کے سات ہزار سے زائد ٹارگٹ کلر گرفتار کیے،آپریشن کے دوران گرفتار ہونے والے ٹارگٹ کلرز نے 7000 سے زائد افراد کی ٹارگٹ کلنگ کا اعتراف کیا گیا،رینجرز آپریشن کے بعد دہشت گردی میں 80 فی صد اور ٹارگٹ کلنگ میں 70 فی صد کمی آئی تھی۔

رینجرز کے کرنل قیصر کی جانب سے نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق آپریشن کے نتیجے میں دہشتگردی کے واقعات میں 80 فیصد، بھتہ خوری میں 85 فیصد،اغوا میں 73 فیصد اور ٹارگٹ کلنگ میں 85فیصد کمی ہوئی جب کہ اس عرصے میں 1236دہشتگرد مارے گئے اور رینجرز کے 30 جوانوں نے جام شہادت نوش کی ،رینجرز نے سندھ سے باہر کارروائی کرتے 428 ملزمان کو اندرون سندھ سے گرفتار کیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں