شاہی خاندان پر تنقید، سوشل میڈیا صارفین کو سزا اور جرمانے کا اعلان saudi-royal-family
The news is by your side.

Advertisement

شاہی خاندان پر تنقید، سوشل میڈیا صارفین پر سزا اور جرمانے کا اعلان

ریاض : سعودی حکام نے سوشل میڈیا پر  شاہی خاندان پر تنقید اور اشتعال انگیز مواد کی تشہیر کرنے پر قید اور 8 لاکھ ریال جرمانہ عائد کرنے کا عندیہ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے حکام کی جانب سے نیا قانون نافذ کیا گیا ہے جس کے تحت سوشل میڈیا ویب سایٹس پر سعودی شاہی خاندان پر تنقید کرنے اور مذہبی اقدار کا تمسخر اڑانے یا اشتعال انگیز مواد کے ذریعے عوامی جذبات کو اُبھارنے والے کو سزا دینے کا عندیہ دے دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سعودی حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ جو بھی شہری ریاست کے امن و استحکام کو سبوتاژ کرنے والے اور نا مناسب مواد کی تشہیر کرنے والے سوشل میڈیا صارفین کو 5 برس قید اور 8 لاکھ ریال جرمانے کا سامان کرنا ہوگا۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب کے حکمرانوں نے مذکورہ اقدامات سماجی رابطوں کی ویب سایٹس پر ملک و مذہب کے خلاف ہونے والے منفی پروپیگنڈے کو روکنے کےلیے اٹھائے گئے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کی مذہبی شخصیت سلمان العودۃ کو قطر سے اچھے تعلقات استوار کرنے کے حق میں ٹویٹ کرنے پر گرفتار کرکے جیل منتقل کردیا گیا ہے۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ سلمان العودۃ کے ٹویٹر پر ایک کروڑ چالیس لاکھ سے زائد فالوورز ہیں، سعودی حکومت کی جانب سے عدالت سے درخواست کی گئی ہے سلمان العودۃ کو سزائے موت کی سزا سنائی جائے۔

یاد رہے کہ اس پہلے بھی سعودی حکومت شاہی خاندان پر تنقید کرنے والے سعودی مبلغ اور خواتین کے حقوق کے لیے آواز اٹھانے والے 7 سرگرم سماجی کارکن خواتین وکلاء کو گرفتار کرچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں