مشرق وسطیٰ کشیدگی، خام تیل کی قیمت 3 سال کی بلند ترین سطح پر
The news is by your side.

Advertisement

مشرق وسطیٰ کشیدگی، خام تیل کی قیمت 3 سال کی بلند ترین سطح پر

نیویارک : مشرق وسطیٰ میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے باعث عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت میں نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا اور خام تیل کی قیمت باہتر ڈالر فی بیرل سے زائد ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق امریکہ کی جانب سےشام پر حملہ اور مشرق وسطیٰ میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے باعث خام تیل کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں عالمی منڈیوں میں خام تیل کی قیمت تین سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

نارتھ برینٹ خام تیل کی قیمت 72ڈالر فی بیرل سے تجاوز کرگئی جبکہ امریکی خام تیل اور عرب لائٹ کی قیمتوں میں بھی نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

انڈسٹری تجزیہ کاروں کےمطابق شام کا تنازعہ، اوپیک اور روس کا پیداوار میں کمی کا معاہدے کی وجہ سے خام تیل مہنگا ہورہا ہے۔

معاشی ماہرین کے مطابق خام تیل کی قیمت اسی ڈالر فی بیرل تک جاسکتی ہے۔

دوسری جانب ایشیائی اسٹاک مارکیٹ مندی کا شکار رہی  جبکہ امریکی اسٹاک مارکیٹ میں مندی ریکارڈ کی گئی۔


مزید پڑھیں : امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے شام پرحملہ کردیا


خیال رہے پاکستان کا انحصار درآمدی خام تیل پر ہے، اسی لئے عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں اضافے کا اثر پاکستان پر بھی اثر پڑتا ہے، مالی سال سنہ 2017 میں پاکستان نے تقریبا7 ارب 70 ڈالر مالیت کی پیٹرولیم مصنوعات درآمد کی ہیں۔

یاد رہے کہ امریکا نے اتحادیوں کے ساتھ مل کرشام پرحملہ کیا ، امریکی اوربرطانوی میزائلوں نے دوما شہر میں فوجی تنصیبات اور کیمیائی ہتھیاروں کے ذخیرے کونشانہ بنایا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں