The news is by your side.

Advertisement

40 سال بعد کیوبا کو وزیرِ اعظم مل گیا

رواں سال سوشلسٹ ملک کیوبا نے آئینی اصلاحات کے ساتھ ملک میں‌ دوبارہ وزیرِاعظم کا عہدہ متعارف کروانے کا فیصلہ کیا تھا. اس سلسلے میں‌ قومی پارلیمان میں رائے دہی کے بعد مانوئل ماریرو کروز کا نام اس عہدے کے لیے منتخب کر لیا گیا ہے اور یوں چار دہائیوں بعد اب کیوبا کا وزیرِ اعظم بھی ہو گا۔

ہوانا میں اس حوالے سے رائے دہی میں 56 سالہ مانوئل ماریرو کو ملک کا وزیرِ اعظم بنانے کی منظوری دی گئی ہے۔ وہ کیوبا کے موجودہ صدر ڈیاز کانیل کے ساتھ اقتدار میں شراکت دار ہوں گے۔

کیوبا، چند سطور میں!
کیوبا کا ذکر آتا ہے تو فیدل کاسترو کا نام سب سے پہلے لیا جاتا ہے۔ امریکا کے عزائم کی راہ میں رکاوٹ بنے رہنے والے فیدل کاسترو دنیا بھر میں انقلابی جدوجہد کے حوالے سے مشہور ہیں۔ پانچ دہائیوں تک کیوبا پر حکم رانی کرنے والے فیدل کاسترو 90 سال زندہ رہے۔

یہ ملک امریکی ریاست فلوریڈا سے لگ بھگ 90 میل کی دوری پر واقع ہے۔ جنوبی امریکا کا یہ ملک بحیرۂ کیربین کا سب سے بڑا جزیرہ ہے۔

فیدل کاسترو کی قیادت میں کیوبا نے اقوامِ عالم میں خود دار اور اپنی آزادی سے پیار کرنے والے ملک کی حیثیت سے پہچان بنائی۔

ساڑھے چار سو برس تک کیوبا اسپین کی نوآبادی رہا۔ یہ گنے اور تمباکو کی پیداوار اور تجارت میں مشہور تھا۔
اسپین کے بعد یہاں امریکا نے اپنے قدم جمانے شروع کیے اور ایک کٹھ پتلی سرکار کے ذریعے اس قوم پر کنٹرول قائم رکھا۔ تاہم اسے فیدل کاسترو کی صورت میں ناکامی اور پسپائی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں