کسٹم انسپکٹر کو قتل نہیں کرایا، ایان علی -
The news is by your side.

Advertisement

کسٹم انسپکٹر کو قتل نہیں کرایا، ایان علی

روالپنڈی : عدالت نے ماڈل ایان علی کے خلاف کرنسی اسمگلنگ کیس کی سماعت بیس ستمبر تک ملتوی کردی، ماڈل گرل کہنا ہے کہ کسٹم انسپکٹر کو قتل نہیں کرایا۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی کی کسٹم عدالت کے جج رانا آفتاب احمد خان نے ماڈل ایان علی کےخلاف کرنسی اسمگلنگ کیس کی سماعت کی۔ ماڈل ایان علی تاخیر سے روالپنڈی عدالت پہنچیں۔

کیس کی سماعت کے دوران ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ نے کسٹم پراسیکیوٹر کے مسلسل دلائل دینے پر برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ وہ بیٹھ جاتے ہیں آپ ہی بولتے رہیں، عدالت نے دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد کیس کی سماعت بیس ستمبرتک ملتوی کر دی۔

عدالت نے ایان علی کی عدالت میں حاضری سے استثنٰی اور پاسپورٹ میں ردوبدل کی درخواست پر بھی فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے۔

ماڈل ایان علی کا میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں کہنا تھا کہ کسٹم انسپکٹر اعجاز جب قتل ہوئے تو میں جیل میں تھی، میں نے کسی کو قتل نہیں کروایا،  کسٹم اسپکٹر اعجاز کے قتل سے متعلق اپنا تحریری بیان تھانہ وارث خان پولیس کو بذریعہ عدالت بھجوادیا ہے۔


 مزید پڑھیں : کرنسی اسمگلنگ کیس، ماڈل ایان علی غیر حاضر،عدالت برہم،حاضری کی استثنیٰ مل گیا


ان کا کہنا تھا کہ میں اپنی بے گناہی مستقبل میں ثابت کروں گی، اگر میڈیا سے بات کروں تو میرے خلاف نیا پراپیگنڈہ شروع کر دیا جائے گا۔

پیشی سے پہلے عدالت نے ماڈل ایان علی کو آج ہر صورت پیش ہونے کے احکامات جاری کئے تھے جبکہ وکیل ایان علی کے مطابق فلائٹ میں تاخیر کے سبب وہ عدالت دیر سے پہنچیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ سماعت میں عدالت نے ایان علی کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور کرتے ہوئے آئندہ سماعت میں ہر صورت پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں