سینٹ کی قائمہ کمیٹی نے سائبرکرائم بل منظورکرلیا -
The news is by your side.

Advertisement

سینٹ کی قائمہ کمیٹی نے سائبرکرائم بل منظورکرلیا

اسلام آباد : آن لائن دہشت گردی اور نوسربازی پر سزاؤں کیلئے قانون سازی کے مسودے کو حتمی شکل دے دی گئی۔ سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے آئی ٹی نے سائبرکرائم بل منظور کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے آئی ٹی نے سائبر کرائم بل کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد سائبر ٹیررازم پر 14 سال قید اور 50 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا۔

سائبر کرائم بل منظور ہونے کے بعد سائبر ٹیررازم اور چائلڈ پورنو گرافی کے جرائم ناقابل ضمانت ہونگے اور تمام جرائم پر گرفتاری یاکارروائی سے پہلے عدالت سے اجازت ضروری ہوگی جبکہ کوئی ڈیٹا عدالتی حکم کے بغیر لیا جاسکے گا نہ شیئر کیا جاسکے گا۔

فرقہ واریت اورمذہبی منافرت پھیلانے اور دہشت گردوں کی فنڈنگ پرسات سال تک قید کی سزا تجویز کی گئی ہے۔ انٹرنیٹ پر دھوکہ دہی کرنے والوں کو تین سال قید اور پانچ لاکھ تک جرمانے کا سامنا کرنا ہوگا۔

بچوں کی غیراخلاقی ویڈیو پر سات سال قید اور پچاس لاکھ تک جرمانہ ہوگا، چوری کےموبائل ٹیمپر کرنے پرتین سال تک قید اور دس لاکھ روپے جرمانہ کیا جائے گا۔

سائبرکرائم کے حوالے سے خصوصی عدالتیں ہائی کورٹ کی مشاورت سے بنائی جائیں گی، عالمی سطح پرسائبر معلومات کا تبادلہ عدالت کی اجازت سے ہوگا۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں