The news is by your side.

Advertisement

کرونا کو مذاق سمجھنے والی گلوکارہ جان سے گئی

کرونا وائرس کی مہلک وبا کو مذاق سمجھنے والی چیک ری پبلک کی گلوکارہ جان سے ہاتھ دھو بیٹھی۔

کرونا وائرس کی مہلک وبا نے دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے کر کروڑوں لوگوں کو متاثر اور لاکھوں کو ہلاک کرچکا ہے اس کے باوجود کچھ بہت سے لوگ اب بھی کرونا کو سنگینی کو سنجیدہ نہیں لے رہے اور اپنے ساتھ ساتھ دوسروں کی زندگیاں بھی خطرے میں ڈال رہے ہیں۔

ایسی ہی داستان یورپی ملک چیک ری پبلک میں رقم ہوئی جہاں معروف گلوکارہ کرونا میں مبتلا ہوکر ہلاک ہوگئیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 57 سالہ گلوکارہ مہلک وبا کو مذاق سمجھا اور ملکی ہیلتھ پاس حاصل کرنے کےلیے جان بوجھ کر انفیکشن کو دعوت دی۔

گلوکارہ کے بیٹے نے بتایا کہ والدہ نے کرونا ویکسین لگوانے سے بھی انکار کردیا تھا۔

Hana Horka: Czech singer dies after catching Covid intentionally - BBC News

گلوکارہ کے بیٹے جان ریک نے کہا کہ میری ماں کے ہلاکت سے دو روز قبل انہوں نے فیس بک پر یہ پوسٹ کیا تھا کہ وہ بغیر کسی ویکسین کے اس انفیکشن سے مکمل صحتیاب ہوگئی ہیں اور بہت جلد تھیٹر ، ہوٹلز اور کلبز میں جانے کے لیے ہیلتھ پاس بنوائیں گی۔

گلوکارہ کے بیٹے نے اپنی والدہ کی موت کا ذمہ دار ویکسین کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو قرار دیا ہے۔

خیال رہے چیک ری پبلک میں ہوٹلز، بار اور دیگر عوامی مقامات میں جانے کے لیے مکمل ویکسینیٹڈ ہونا لازمی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں