The news is by your side.

Advertisement

دلخراش واقعہ، چور کے شبہے میں باپ کے ہاتھوں کمسن بیٹی کا قتل

کبھی کھبی انجانے میں ایسی غلطیاں سرزد ہوجاتیں ہیں، جن کا خمیازہ انسان کو زندگی بھر بھگتنا پڑتا ہے۔

ایسا ہی دلخراش واقعہ امریکی ریاست ٹینیسی میں وقوع پزیر ہوا، جہاں حقیقی باپ نے گھر میں گھسنے والی اپنی ہی بیٹی کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتاردیا۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق واقعہ ستائیس اگست اس وقت پیش آیا جب اکتیس سالہ ولیم اولیور اپنی الماری میں سونے کے کپڑے ٹٹول رہے تھے کہ ان کی بیوی نے انہیں خبردار کیا کہ مجھے کسی کے گھر میں گھسنے کی آواز آئی ہے۔

یہ سنتے ہی ولیم اولیور نے گھر کے اطراف کا جائزہ لینا شروع کیا، اچانک بیڈ روم کے دروازے پر اسے ایک عکس نظر آیا اور اس نے فوری طور پر فائر کھول دیا، وہ گولی ان کی آٹھ سالہ علیلہ باسیٹ کے سینے میں پیوست ہوگئی، باپ اپنے ہاتھوں سے اپنی لخت جگر کو شدید زخمی ہونے پر ششد رہ گیا، فوری طور پر بچی کو نجی اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں ڈاکٹرز نے اسے مردہ قرار دے دیا۔

اندوہناک واقعے پر ریاست ٹینیسی کی مقامی عدالت نے باپ پر لاپرواہی کے زریعے گولی مارنے کے الزام عائد کرتے ہوئے جیل بھیج دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں