The news is by your side.

Advertisement

فون پر بات کرتے ہوئے باپ نے بیٹیوں کو قتل کردیا اور۔۔

امریکا میں ایک باپ نے اپنی 2 بیٹیوں کو قتل کرکے خودکشی کرلی، امریکی ریاست اوکلاہاما میں گھریلو تشدد کے واقعات میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔

اوکلاہاما میں پیش آنے والے اس واقعے میں 56 سالہ ڈیوڈ نے فون پر اپنی اہلیہ سے بات کرتے ہوۓ اپنی 14 اور 19 سال کی بیٹیوں کو گولی مار کر قتل کیا اور پھر خود بھی اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا۔

ڈیوڈ کی اہلیہ اس وقت دفتر میں تھیں جب انہوں نے پولیس کو کال کر کے بتایا کہ ان کی شوہر سے تھوڑی دیر قبل فون پر بات ہوئی ہے جس میں انہوں نے اپنی بیٹیوں کو اور خود کو مارنے کی دھمکی دی ہے۔

اہلیہ نے پولیس کو گھر میں داخل ہونے کی اجازت دیتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے گولی کی آواز بھی سنی ہے۔

پولیس گھر میں داخل ہوئی تو دونوں لڑکیاں اور 56 سالہ ڈیوڈ مردہ حالت میں موجود تھا۔

خاتون کا کہنا ہے کہ ان کی شادی مشکلات کا شکار تھی اور ان کا شوہر اس سے قبل بھی کئی دھمکیاں دے چکا تھا تاہم وہ کوئی حرکت کرنے سے باز رہا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ڈیوڈ کے گھر سے سنہ 2017 میں بھی گھریلو جھگڑے کی ایک شکایت آچکی ہے جس میں پولیس کو طلب کیا گیا تھا۔

دوسری جانب امریکا کے ڈومیسٹک وائلنس انٹروینشن سروسز کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ کرونا وبا اور لاک ڈاؤن کے دوران گھریلو جھگڑوں میں بے حد اضافہ ہوا ہے اور پرتشدد واقعات سامنے آرہے ہیں۔

انہوں نے ایسے واقعات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہماری سروسز ایسے ہی افراد کے لیے ہیں جو گھریلو پریشانیوں کا شکار ہیں، ہم صرف ایک فری کال کی دوری پر ہیں۔ لوگوں کو یہ شعور دینا ضروری ہے کہ وہ مسئلے کے پرتشدد حل کے بجائے مدد لینے کا راستہ اختیار کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں