The news is by your side.

Advertisement

پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں “ٹی او آرز” پر حکومت اور اپوزیشن کا ڈیڈ لاک برقرار

اسلام آباد :پارلیمانی کمیٹی کے آج ہونے والے اجلاس میں بھی حکومت اور اپوزیشن کی ٹیموں کے درمیان پر “ٹی او آرز” کی تشکیل میں ڈیڈ لاک برقرار ہے،حکومتی و اپوزیشن رہنماؤں نے ایک دوسرے کو ڈیڈ لاک کا ذمہ دار قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق آج پارلیمانی کمیٹی کے’’ٹی او آرز‘‘پر شق وار ٖغور کرنے کے لیے بلائے گئے اجلاس میں ڈیڈ لاک پیدا ہوگیا ہے،حکومت اور اپوزیشن کمیٹیوں نے ڈیڈ لاک کے لیے ایک دوسرے کو ذمہ دار قرار دے دیا، دوسری طرف تحریک انصاف کے سینئر رہنماؤں کا اجلاس جاری ہے جس میں ڈیڈ لاک پر غور کیا جارہا ہے۔

پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس کے بعد متحدہ اپوزیشن کے قائد اور سینیٹر چوہدری اعتزاز احسن نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے واضع کیا کہ متحدہ اپوزیشن کے درمیان کوئی اختلاف نہیں ہے،اپوزیشن پانامہ لیکس پر وزیراعظم سے تحقیقات کے مطالبے سے دستبردار نہیں ہوئی، حکومت جتنا ذور لگا لے مریم نواز اور حسین نواز سے تحقیقات میں وزیراعظم کا نام خود ہی شامل ہوجانا ہے،اپوزیشن اپنے 15 سولات میں کسی ایک سے بھی دستبردار نہیں ہوئی۔

اس موقع تحریک انصاف کے رہنما اور اپوزیشن ٹیم کے رکن شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ حکومت چاہتی ہے کہ کمیشن بن جائے اور وزیر اعظم کی کرپشن پر پردہ پڑ جائے،ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے،اگر اپوزیشن کے 15 سوالات نہیں مانیں گے تو پارلیمانی کمیٹی کے 4 نکاتی ابتدایے کوبھی صفر سمجھا جائے۔

جب کہ دوسری طرف حکومت نے پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس پر اعلامیہ جاری کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ حکومت نے قانونی بنیادوں پر اپوزیشن کے 15سولات کو مسترد کرتے ہوئے ہر سوال کا شق وار جواب دیا ہے، اور جواب کی کاپیاں اراکین کمیٹی کو بھیج دی گئیں ہیں۔

حکومتی علامیہ کے مطابق حکومتی کمیٹی نے ذور دیا کہ پانامہ لیکس کے بجائے ’’ٹی او آرز‘‘ کے تمام نکات پر یکساں طور زیر بحث لایا جائے اور انکوائری ایکٹ 1956 کو منسوخ کر کے انکوائری ایکٹ 2016 بنالیں جس کے تحت موثر تحقیقاتی نظام بنایا جائے۔

اپوزیشن کی ٹیم نے اس موقع پر موقف اختیار کیا کہ تحقیقاتی نظام میں پانامہ کانام بہ طور ٹائیٹل شامل رہے گا،تحقیقات کا آغاز وزیرِ اعظم کے اہلِ خانہ سے کیا جائے تو وزیر اعظم کا نام خود بہ خود بہ طور وزیر اعظم نہ سہی، بہ طور والد کے ہی آجائے گا۔

اعلامیہ کے مطابق حکومت اور اپوزیشن کی ٹیموں نے ’’ٹی او آرز‘‘ پر اجلاس جاری رکھنے پر اتفاق کرتے ہوئے آئندہ پارلیمانی کمیٹی کا آئندہ اجلاس 30 مئی کی شام 4 بجے ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں