The news is by your side.

Advertisement

گاڑی کیوں خریدی؟ دلت نوجوان پر انتہا پسند ہندوؤں کا وحشیانہ تشدد

دہلی: دلت ہونا نوجوان کے لیے جرم بن گیا، اونچے ذات کے ہندوؤں نے تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد نئی گاڑی بھی تباہ کر دی.

تفصیلات کے مطابق دنیا بھر کو جمہوریت اور امن کا درس دینے والے بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ وحشیانہ سلوک کا سلسلہ جاری ہے.

بھارت میں دلت برادری مسلسل ہندوو توا دہشت گردی کا شکار ہے، نریندر مودی کے اقتدار میں آنے کے بعد اس خوفناک عمل میں شدت آگئی ہے.

نئی کار خریدنے کے عمل کو دلت نوجوان کا جرم ٹھہرا دیا گیا. واقعے پر گجرات کا انتہا پسند ہندو ایم ایل اے بپھرگیا.

دلت نوجوان پر بی جے پی کے ایم ایل کے غنڈوں نے بہیمانہ تشدد کیا. لوہے کی راڈ سے پے در پے وار کیے گئے.

مزید پڑھیں: بھارت: ہندو انتہا پسندوں کا مسلمان بزرگ پر گوشت فروخت کرنے کا الزام، بدترین تشدد

اس دوران لڑکا رحم کی درخواست کرتا رہا، مگر انتہا پسندوں نے تشدد جاری رکھا، بےرحم انتہا پسندوں نے دلت نوجوان کی گاڑی بھی تباہ کردی، واقعے کی ویڈیو وائرل ہوگئی، مگر تاحال ایم ایل او کو گرفتار نہیں کیا گیا.

خیال رہے کہ بی جے پی سرکار کے آنے کے بعد سے بھارت بدترین انتہا پسندی کا شکار ہے. گزشتہ روز بھی اترکھنڈ میں ایک دلت کو صرف اس لیے قتل کر دیا گیا، کیوں کہ اس نے اونچی ذات کے ہندوؤں کے سامنے بیٹھ کر کھانا کھایا تھا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں