The news is by your side.

Advertisement

اسٹیل مل کی نجکاری کا فیصلہ نہیں کیا، تو ڈالر مزید مہنگا ہوجائے گا: دانیال عزیز

اسلام آباد: نجکاری کے وفاقی وزیر دانیال عزیز نے کہا ہے کہ نجکاری کے معاملے پر قیاس آرائیاں مناسب نہیں. یہ معاملہ حکومت کے لیے مسئلہ بنا ہوا ہے، جسے فوری حل کرنا ہوگا۔

دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ پی آئی اے پر حکومت کے یومیہ 15 کروڑ روپے ضایع ہورہے ہیں، دوسری جانب اسٹیل مل جیسی بند کارپوریشن کے لئے تنخواہیں دی جارہی ہیں، جو ملکی خزانہ پر بوجھ ہیں۔

اسٹیل مل خریدنے والا ملازمین کو تنخواہیں اور مراعات دے گا، یوں‌ نجکاری سے اسٹیل مل ملازمین کی تنخواہیں حکومت کے سر سےاتر جائیں گی

دانیال عزیز وفاقی وزیر نجکاری

ن لیگ کے مرکزی رہنما کا کہنا تھا کہ ہم ملازمین کی تنخواہوں کی مد میں سالانہ 300 ملین ڈالر ادا کر رہے ہیں. ہمارے مخالفین ڈالرمہنگا ہونے کا شورمچا رہے ہیں، درحقیقت اسٹیل مل سے متعلق بروقت فیصلہ نہ کرنے سے ڈالر مزید مہنگا ہو جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ اسٹیل مل خریدنے والا ملازمین کو تنخواہیں اور مراعات دے گا، یوں‌ نجکاری سے اسٹیل مل ملازمین کی تنخواہیں حکومت کے سر سےاتر جائیں گی. اسٹیل مل کی نجکاری سے حکومتی واجبات کم ہوجائیں گے.

وزیرنجکاری دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ یہ تصور کہ نجکاری سے یہ ہو جائے، وہ ہوجائے گا، درست نہیں، اسٹیل مل کی نجکاری سے سندھ سدرن گیس کمپنی کا بل ادا ہوگا اور نیشنل بینک کا قرضہ بھی ادا ہو جائے گا. یہ ملکی معشیت کے لیے ایک سود مند فیصلہ ہے.


پیپلزپارٹی اسٹیل مل اور پی آئی اے کی نجکاری کی مخالفت کرے گی: رضا ربانی


یاد رہے کہ گذشتہ چند ماہ سے حکومت کی جانب سے اسٹیل مل کی نجکاری کی حمایت میں بیانات دیے جارہے ہیں. کچھ روز قبل مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا تھا کہ اگر کوئی پارٹی پی آئی اے اور اسٹیل مل کے واجبات ادا کرنے کی یقین دلائی کروائے، تو ایک ڈالر میں‌ حکومت یہ ادارے فروخت کر دے گی. 

حکومتی موقف اور اقدامات پر اپوزیشن کی جانب سے سخت ردعمل سامنے آیا. سابق چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے اپنے ایک حالیہ بیان میں‌ کہا تھا کہ پیپلزپارٹی ایسے کسی بھی اقدام کی بھرپور مخالفت کرے گی.


اربوں کی اسٹیل مل ایک ڈالرمیں برائے فروخت: مشیرخزانہ مفتاح اسماعیل کا انوکھا اعلان


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں