The news is by your side.

Advertisement

دارالصحت اسپتال کی اوپی ڈی کو سیل کردیا گیا، ملازمین اور شہری آمنے سامنے

کراچی : ننھی بچی نشوہ کی موت پر سندھ حکومت نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے دارالصحت اسپتال کی اوپی ڈی کو سیل کردیا، اسپتال کے ملازمین اور احتجاج کرنیوالے شہری آمنے سامنے آگئے، دونوں جانب سے شدید نعرے بازی کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق ہیلتھ کیئر کمیشن کے عملے نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے ابتدائی طور پر دارالصحت اسپتال کی او پی ڈی سیل کردی۔

اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کو تفصیلات بتاتے ہوئے چیئرمین ہیلتھ کیئر کمیشن ٹیپو سلطان نے کہا کہ اسپتال کی اوپی ڈی کو سیل کر نے کے بعد نئے داخلوں پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے۔

کارروائی کے موقع پر شہریوں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی، کار سرکار میں مداخلت کرتے ہوئے دارالصحت انتظامیہ نے ملازمین کو ڈھال بنالیا، اسپتال کے ملازمین اوراحتجاج کرنے والے شہری آمنے سامنے آگئے، اسپتال کے باہر دونوں جانب سے شدید نعرے بازی کی گئی۔

دارالصحت اسپتال کےخلاف ایکشن کو روکنے کیلئے انتظامیہ نے کرائے کی خواتین مظاہرین کو بھی بلوا لیا۔ گاڑی بھر کرخواتین اسپتال کے باہر پہنچ گئیں۔

اے آر وائی کے رپورٹر نے جب ان سے آنے کی وجہ پوچھی گئی تو آئیں بائیں شائیں کرنے لگیں بلکہ گاڑی کا ڈرائیور بھی معاملے سے انجان نکلا اس نے بتایا کہ سمامہ سے آرہے ہیں بعد ازاں پولیہس کے سامنے جب دال نہ گلی تو کچھ خواتین رکشے اور کچھ پیدل ہی واپس چلی گئیں۔

مشتعل شہریوں نے “اسپتال بند کرو” اور قاتل قاتل کے نعرے لگائے، بعد ازاں سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن کی ٹیم دارالصحت اسپتال سے روانہ ہوگئی۔

مزید پڑھیں: ننھی نشوہ کی ہلاکت : اسپتال پر صرف پانچ لاکھ روپے جرمانہ، دو ملازمین ذمہ دار قرار

واضح رہے کہ انیس ماہ کی بچی نشوہ دارالصحت اسپتال میں غلط انجکشن لگنے کے باعث دوران علاج جاں بحق ہوئی تھی جس کے بعد وزیراعلیٰ سندھ نے دارالصحت اسپتال سیل کرنے کا حکم دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں