The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب نے حرمین شریفین کی تاریخی اٹلس امریکا اور برطانیہ کو بھجوادی

ریاض: شاہ عبدالعزیز ریسر چ فاؤنڈیشن اینڈ آرکائیو ( دراہ) نے عربی اور انگریزی زبان پر مشتمل مکہ اور دیگر مذہبی زیارات کی باتصویر اٹلس امریکا اور برطانیہ بھجوادی۔

تفصیلات کے مطابق دراہ کی جانب سے بھیجی جانے والی یہ اٹلس برطانوی میوزیم اور امریکی لائبریری آف کانگریس میں سائنسدانوں اور محققین کی رہنمائی کے لیے رکھی جائے گی۔

بتایا جارہا ہے کہ یہ اٹلس 325 صفحات پر مشتمل ہے اور اس میں مکہ اور حرمین شریفین کی تاریخی تصاویر اور تاریخ مرتب کی گئی ہے۔ یہ اٹلس 16 سال قبل مرتب کی گئی تھی اور اس میں عرب اور غیرملکی مسلم زائرین کی تاریخی تحاریر بھی شامل ہیں۔

اسلام کی تاریخ کو عمومی اور مکہ شہر کی تاریخ کو خصوصی طور پر اجاگر کرنے کے لیے دراہ نے یہ اٹلس کئی بین الاقوامی کتب میلوں میں بھی بھجوائی ہے، یہ ریاض کے بین الاقوامی کتاب میلے میں بھی میسر تھی اور دراہ کی ویب سائٹ سے بھی اسے حاصل کیا جاسکتا ہے۔

یہ اٹلس ڈاکٹر معراج نواب مرزا اور ڈاکٹر عبداللہ صالح شویش کی مشترکہ تالیف ہے اور اسے چھ ابواب میں منقسم کیا گیا ہے۔ مکہ مسلم اور مغربی پینٹرز کی نظر میں، ابتدائی فوٹوز اور خاکے ، اور مسجد الحرام اور مکہ شاہ عبدالعزیز اور ان کے بیٹوں کے دور میں، شامل ہیں۔

اس اٹلس میں اس دور کی بھی تصاویر شامل ہیں جب نیا نیا کیمرہ ایجاد ہوا تھااور بلیک اینڈ وائٹ فلم ہوا کرتی تھی۔ یہ تصاویر مقامی اور غیر ملکی مسلم فوٹو گرافرز نے کھینچی تھیں۔

اس ڈاکیومنٹ میں جدید سعودی حکومت کی مکے کے لیے خدمات کا تذکرہ بھی کیا گیا ہے جیسا کہ مکے تک روڈز کی تعمیر، زائرین کے لیے پانی کا اہتمام، چھت کی تعمیر، مسجد میں روشنی کا انتظام، کعبے کا غلاف تیار کرنے کے لیے فیکٹری کی تشکیل ، دروازے کی تعمیر اور مکہ کلاک کی تعمیر شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں