site
stats
سندھ

گلبہارمیں بھتہ خوروں کا بلڈرکے دفتر پردستی بم حملہ

کراچی : گلبہار میں بھتہ نہ دینے پر گینگ وار کے کارندوں نے بلڈر کے دفتر پر دستی بم مارا، بلڈر کو چند ماہ پہلے بھتے کی پرچی ملی تھی۔ تاہم کسی جانی یا مالی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

تفصیلات کے مطابق بھتہ خوری کا جن پھربوتل سے نکلنے لگا، کراچی کے علاقے گلبہار میں نامعلوم افراد کی جانب سے بلڈرکے دفترپردستی بم سے حملہ کیا گیا۔

ملزمان موٹرسائیکل پرآئے اوردستی بم پھینک کرفرارہوگئے دستی بم پھٹنے سے دفتر کے شیشوں کو نقصان پہنچا، دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے دستی بم پھینکا اورفرارہونے میں کامیاب ہوگئے۔

سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ہیلمٹ پہنے شخص نے سڑک کی دوسری طرف سے کریکر پھینکا جو دیوارسے ٹکرا کرسڑک پر آگرا اور دھماکہ ہوگیا۔

سیکورٹی گارڈ نے پولیس کو بتایا کہ ہم چائے پی رہے تھے کہ دھماکہ سنا، باہر آکر دیکھا تو دور دور تک کوئی نہیں تھا، پولیس کا کہنا ہے کہ بلڈرکوایک ماہ پہلے بھتے کی پرچی ملی تھی۔

حملہ کرنے والوں کا تعلق سلیم چاکلیٹی گروپ سے ہے۔ ذرائع کے مطابق عمارت کی تعمیر کرنے والے بلڈرز سے ایک ماہ قبل 50 لاکھ روپے بھتہ طلب کیا گیا تھا۔

کراچی میں جاری آپریشن سے بھتہ خوری کی وارداتوں میں کمی تو ضرور آئی ہے لیکن وارداتیں پوری طرح ختم نہیں ہوئیں۔ سوال یہ ہے کہ شہرمیں بارود کیا اتنی آسانی سےمل جاتا ہے کہ کوئی بھی کریکر بنالے؟

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top