The news is by your side.

Advertisement

ڈان لیکس کا معاملہ ختم ہوچکا، بیان بازی بند کی جائے، چوہدری نثار

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ ڈان لیکس کا معاملہ ختم ہوچکا اب اس معاملے پر بیان بازی حیران کن ہی نہیں پریشان کن بھی ہے، سول ملٹری تعلقات سیاسی نہیں قومی مسئلہ ہیں۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ ڈان لیکس اتنا بڑا مسئلہ نہیں تھا جتنا شور اُس پر مچایا گیا، حکومت کو اگر کچھ چھپانا ہوتا تو کبھی بھی کمیٹی تشکیل نہیں دی جاتی۔

انہوں نے کہا کہ سول ملٹری تعلقات کا تماشہ بنانا اور اسے سیاست کی نظر کرنا اچھی روایت نہیں کیونکہ سول ملٹری تعلقات قومی مسئلہ ہیں، پاکستان وہ واحد ملک ہے جہاں سول ملٹری تعلقات پر سیاست کی جاتی ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ وزیراعظم ہاؤس سے جاری ہونے والا نوٹی فکیشن محض ایک آرڈر ہی تھا تاہم ڈان لیکس کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ کل جاری کی جاچکی ہے جس پر پاک فوج نے بھی اطمینان کا اظہار کیا۔

چوہدری نثار نے کہا کہ کچھ ریٹائرڈ افسران نے ڈان لیکس پر ایسے تبصرے دیے جیسے وہ پاک فوج کے ترجمان ہوں، ایسے بیانات کی وجہ سے ملک میں افرا تفری کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کی گئی، دشمن چاہتا ہے ملک میں سول ملٹری تعلقات کبھی مستحکم نہ ہوسکیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ڈان لیکس کا معاملہ اب ختم ہوگیا لہذا اس حوالے سے بیان بازی کرنے سے گریز کرنا چاہیے۔ بانی ایم کیو ایم کے ریڈوارنٹ سے متعلق چوہدری نثار نے کہا کہ پندرہ جون سے قبل بانی ایم کیو ایم کے ریڈ وارنٹ جاری کردیے جائیں گے۔

وفاقی وزیر داخلہ نے مزید کہاکہ گلگت بلتستان جانے کےلئے این اوسی کااجرا ضروری بنادیاگیا تھا تاہم مشاورت کے بعد اسے ختم کردیا گیا ہے مگر این جی اوز، اہم منصوبوں اور غیرملکیوں کو گلگت ، بلتستان جانے سے قبل سیکیورٹی کلیئرنس ضرور لینے ہوگی۔

نادرا کی کارکردگی پر تبصرہ کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ تین ماہ کے دوران بلاک کیے جانے والے شناختی کارڈز کی تعداد 3 لاکھ 53 ہزار تک پہنچ چکی ہے، بہت سے پاکستانیوں کے بھی شناختی کارڈ بلاک کیے گئے جبکہ ایک لاکھ 74 ہزار غیر ملکیوں کے شناختی کارڈ بلاک کیے گئے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں