The news is by your side.

Advertisement

ڈی سی گوجرانوالہ سہیل ٹیپو کی پراسرار موت معمہ بن گئی

گوجرانوالہ : پانچ روز گذر گئے ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ سہیل ٹیپو کی پراسرار موت کی وجوہات کا سراغ نہ لگایا جا سکا، پولیس نے چند ملازمین کو حراست میں لیا اور بیانات ریکارڈ کرکے چھوڑ دیا۔

تفصیلات کے مطابقڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ سہیل ٹیپو کی پراسرارموت کی گتھی پانچ روز گزرنے کے بعد بھی سلجھ نہ سکی اےآر وائی نیوزکو سہیل ٹیپو کی میڈیکل رپورٹ مل گئی، تاہم فرانزک رپورٹ منگل کو ملے گی۔

میڈیکل رپورٹ کے مطابق تیرہ مارچ کو سہیل ٹیپو نے ڈی ایچ کیو اسپتال میں اپنا میڈیکل چیک اپ کرایا، ڈی سی کو شدید ذہنی دباؤ کا شکار قراردیا گیا تھا، سہیل ٹیپو کو دو ہفتےآرام کا مشورہ دیاگیا، جس پر ڈی سی نے کمشنر گوجرانوالہ کو چودہ سے اٹھائیس مارچ تک چھٹی کی درخواست دی۔

ذرائع کے مطابق کمشنر نے درخواست منظوری کیلئے چیف سیکریٹری کو بھجوا دی تھی جس کا جواب نہیں آیا، پولیس نے تفتیش کیلئے ڈپٹی کمشنر کے چند ملازمین کو حراست میں لیا تھا، جن کے بیانات لینے کے بعد انہیں چھوڑ دیا گیا، میت سے لیے گئے نمونوں کی فرانزک رپورٹ آج ملے گی۔

واضح رہے کہ ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ سہیل احمد ٹیپو 22مارچ کو اپنے گھر میں مردہ حالت میں پائے گئے تھے، ان کی ہاتھ بندھی ہوئی لاش پنکھے سے لٹکی ہوئی تھی۔

ان کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ سہیل احمد ڈپریشن کا شکار تھے اور انہیں اپنی نوکری کا بھی دباﺅ تھا، سہیل احمد ٹیپو گزشتہ سال دسمبر میں ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ کے عہدے پر تعینات ہوئے تھے اس سے پہلے وہ ایڈیشنل سیکریٹری کے فرائض سرانجام دے رہے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں