The news is by your side.

Advertisement

دارا سنگھ: مشہور پہلوان جس نے بالی وڈ اداکار، ہدایت کار اور اسکرپٹ رائٹر کی حیثیت سے پہچان بنائی

12 جولائی 2012 کو موت نے دارا سنگھ کو پچھاڑ کر ہمیشہ کے لیے زندگی کے اکھاڑے سے “باہر” کر دیا تھا۔ بھارت کے اس پہلوان اور کشتی کے کئی مقابلوں کے فاتح نے بعد میں ہندی اور پنجابی فلموں‌ میں اداکاری کے جوہر دکھائے اور اس میدان میں‌ بھی خود کو منوایا۔

لمبے چوڑے دارا سنگھ کو بچپن ہی سے کسرت اور پہلوانی کا شوق تھا۔ کُشتی لڑنے کے لیے کم عمری میں تربیت حاصل کرنا شروع کی۔ استاد سے داؤ پیچ سیکھ کر ایک روز مقامی اکھاڑے میں اترے۔ ابتدائی اور آزمائشی مقابلوں میں پہلوانوں سے زور آزمائی میں کبھی چت ہوئے تو کسی پر بھاری پڑے۔ انھیں مقامی اکھاڑے سے لے کر عالمی سطح تک منعقدہ کُشتی کے مقابلوں میں متعدد ٹائٹل اپنے نام کرنے کا موقع ملا۔ دارا سنگھ نے بھارت میں رستمِ پنجاب اور بعد میں رستمِ ہند کا ٹائٹل بھی اپنے نام کیا تھا۔ 1968ء میں انھوں نے ورلڈ ریسلنگ چیمپئن شپ جیتی تھی اور اپنے اسی دورِ‌ پہلوانی میں فلم انڈسٹری میں بھی کام شروع کیا۔

ان کا مکمل نام دارا سنگھ رندھاوا تھا۔ 1928ء میں امرتسر میں پیدا ہونے والے دارا سنگھ کو پہلوانی کا شوق اکھاڑے تک لے گیا جس میں‌ ان کی فتوحات کی تفصیل آپ جان چکے ہیں۔ فلم نگری کی بات کریں تو ”سکندر اعظم“ اور ”ڈاکو منگل سنگھ“ جیسی فلموں سے شروع ہونے والا اداکاری کا سفر ”جب وی میٹ“ تک جاری رہا جو 2007 میں سامنے آئی تھی۔ یہ دارا سنگھ کی زندگی کی آخری فلم تھی۔

اس فلم میں انھوں نے کرینہ کپور کے دادا کا کردار نبھایا تھا۔ بالی وڈ کی مشہور فلم ”کل ہو نہ ہو“ میں بھی وہ اسی روپ میں نظر آئے تھے۔ دارا سنگھ نے ہندی کے علاوہ پنجابی فلموں میں‌ بھی کام کیا اور ٹی وی ڈراموں میں بھی اداکاری کے جوہر دکھائے۔ اس پہلوان اداکار نے خود کو بالی وڈ میں بحیثیت پرڈیوسر اور رائٹر بھی آزمایا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں