The news is by your side.

Advertisement

برطانوی شہزادی ڈیانا جو قلیل تنخواہ پر معمولی نوکریاں کرتی رہی

برطانوی عوام 1980ء تک ڈیانا سے ناواقف تھے۔ عوام میں مقبولیت اور دنیا بھر میں ڈیانا کا چرچا 1981ء میں اس وقت ہوا جب برطانوی شہزادہ چارلس کے ساتھ ان کی منگنی انجام پائی اور شادی کے بعد وہ شاہی خاندان کا حصّہ بنیں اور ویلز کی شہزادی کہلائیں۔

پری پیکر لیڈی ڈیانا نے کروڑوں دلوں پر راج کیا۔ برطانوی شہزادے کی شریکِ‌ حیات اور شاہی خاندان کی بہو ہونے کے ناتے اعزاز و مرتبہ، عزّت و تکریم کے ساتھ وہ عوام میں بے پناہ مقبول ہوئیں اور اس کا ایک سبب ان کی فلاحی کام تھے۔

آج لیڈی ڈیانا کی برسی ہے جو شہزادی بننے سے پہلے ایسی نوجوان لڑکی تھی جس نے چند معمولی نوعیت کی نوکریاں کیں اور فلیٹ میں زندگی بسر کرتی رہیں۔

یہ بات آپ کی دل چسپی کا سبب بنے گی کہ لیڈی ڈیانا تعلیمی میدان میں ہرگز نمایاں نہ تھیں۔ انھیں ابتدائی تعلیم گھر پر دی گئی اور پھر ایک پرائیویٹ اسکول میں داخل کرا دیا گیا۔ کہتے ہیں وہ بچپن میں خاصی شرمیلی تھیں، لیکن بعد میں انھوں نے اپنی زندگی کو تبدیل کیا اور اعتماد کا مظاہرہ کیا۔ وہ نوعمری میں موسیقی کا شوق رکھتی تھیں اور انھوں نے پیانو بجانا سیکھا۔

ڈیانا نے موسیقی کے میدان میں اپنی صلاحیتوں کو آزمایا اور کام یاب رہیں۔ انھوں نے تیراکی سیکھی تھی اور کھانا پکانے کا ایک کورس بھی کیا تھا۔

لیڈی ڈیانا کو ان کے پیانو بجانے کی مہارت اور موسیقی کے شوق نے بھی چھوٹی موٹی نوکریاں دلوائیں‌۔ یہی نہیں وہ رقص میں بھی مہارت رکھتی تھیں اور یہ فن بھی ان کے کام آیا۔ وہ اس طرح کہ لیڈی ڈیانا نے ڈانس انسٹرکٹر کے طور پر کام کیا۔ اس کے علاوہ ایک اسکول میں نرسری ٹیچر کی اسسٹنٹ کے طور پر ملازمت کی۔ انھوں نے قلیل تنخواہ پر معمولی نوکریاں بھی کیں جن میں صفائی کا کام اور ایک امریکی نژاد برطانوی جوڑے کے بچّوں کو سنبھالنے کا کام بھی شامل تھا۔ وہ آیا یا خدمت گار کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں نبھا کر تنخواہ پاتی رہیں۔

لیڈی ڈیانا نے مختلف پارٹیوں میں مہمانوں کی خاطر تواضع کرکے بھی رقم کمائی اور میزبانی کے دوران پیانو بجا کر ان سے داد بھی وصول کرتی رہی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں