The news is by your side.

Advertisement

بیمار بادشاہ کی دیکھ بھال نے فیروز شاہ کو ریاست کا سلطان بنا دیا

ہندوستان میں سلطان غیاث الدین تغلق نے دہلی پر حکومت قائم کی تھی جس کے خاندان کا ایک مشہور حکم راں فیروز شاہ تغلق تھا۔ اس کا دور 1351ء سے شروع ہوا اور 1388ء میں‌ آج ہی کے دن اس کی وفات تک جاری رہا۔

وہ محمد تغلق کا چچا زاد بھائی تھا جس کی بیماری کے دوران فیروز شاہ نے اس کی خوب تیمار داری کی جس سے متاثر ہو کر محمد تغلق نے اسے اپنا جانشین نام زد کر دیا تھا۔ کہتے ہیں فیروز شاہ نے بھی محمد تغلق کے بعد ملک میں ابتری اور بد انتظامی کو بہت اچھے انداز سے ختم کر کے خود کو اس منصب کا اہل ثابت کر دکھایا۔

فیروز شاہ تغلق کے باپ کا نام سپہ سالار رجب تھا جو سلطان غیاث الدین تغلق کا بھائی تھا۔ فیروز شاہ سات سال کا تھا جب اس کے باپ کا انتقال ہو گیا تھا۔ اس کے بعد تغلق شاہ نے ہی اس کی تعلیم و تربیت اور پرورش کی۔

جب فیروز شاہ تخت نشین ہوا تو اس وقت وہ کوئی پچاس برس کا تھا۔ فیروز شاہ کو مؤرخین نے ایک عالم فاضل اور نیک انسان لکھا ہے۔ عدل اس کے کردار کی نمایاں خوبی تھی۔

فیروز شاہ نے 40 سال کے قریب حکم رانی کی اور بوقتِ وفات 90 سال کا تھا۔

بادشاہ کے خود تحریر کردہ حالات ایک کتاب میں موجود ہیں جو کہ فتوحات فیروز شاہی کے نام سے مشہور ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں