The news is by your side.

Advertisement

انگریزی زبان کے اوّلین شاعر جیفری چاسر کی مشہورِ زمانہ "پکچر گیلری” کا تذکرہ

جیفری چاسر کو انگریزی کا اوّلین شاعر اور برطانیہ کی ممتاز ترین شخصیت کہا جاتا ہے جس نے انگریزی زبان میں‌ اپنی نظموں اور شاہی دربار میں اپنی قابلیت کی بنیاد پر منفرد پہچان بنائی۔ چاسر کے حالاتِ زندگی اور اس کے بارے میں عام معلومات بھی بہت کم سامنے آسکی ہیں۔ تاہم اس کی شاعری کو نہایت پُراثر اور اسے اہم ترین شخصیات میں شمار کیا جاتا ہے۔

اس کا سنِ پیدائش 1340ء بتایا جاتا ہے جب کہ وفات 1400ء میں ہوئی۔ اس کے کتبے پر تاریخِ وفات 25 اکتوبر درج ہے۔ کہا جاتا ہے کہ وہ ایک معمولی تاجر کا بیٹا تھا، جس کے والد کو 1349ء میں پھیلنے والی طاعون کی وبا میں اپنے قریبی عزیز کی موت کے بعد اس کے جائیداد یا بڑی رقم ورثہ کے طور پر ملی جس نے اس کی زندگی بدل کر رکھ دی۔

جیفری چاسر نے اس زمانے میں شاہی ملازمت حاصل کرلی اور اپنی ذہانت اور لیاقت سے ترقی کرتے کرتے شاہ ایڈورڈ سوم کے دربار میں بڑا اثر رسوخ حاصل کرلیا۔ اسی زمانے میں برطانیہ اور فرانس کے درمیان مشہور سو سالہ جنگ لڑی گئی۔ اس جنگ میں چاسر نے سپاہی کے طور پر خدمات سرانجام دیں۔

وہ ایک پڑھا لکھا شخص اور شاعر تھا۔ اسے فرانسیسی، اطالوی، لاطینی اور انگریزی زبانوں پر عبور حاصل تھا اور اس قابلیت کی بنا پر اسے دو دفعہ اٹلی میں سفیر کے طور پر بھیجا گیا۔

ماہرین کا خیال ہے کہ اسی دور میں وہ اٹلی کے اس دور کے قومی شاعر بوکیچیو سے ملا جس کی نظموں اور افکار نے چاسر کو متاثر کیا اور بعد میں اس نے بھی انگلستان لوٹ کر اپنی تخلیقی صلاحیتوں کا بھرپور اظہار کیا۔ اس کی شاعری کی خاص بات اپنے زمانے سے مطابقت ہے۔

چاسر کی ایک مشہورِ زمانہ نظم کو چودھویں صدی کے برطانیہ کی حقیقی معنوں میں عکاس کہا جاتا ہے۔ یہ نظم پکچر گیلری کے نام سے مشہور ہے۔ یہ بھی کہتے ہیں کہ اگر کوئی تاریخ کا رسیا چودھویں صدی کے بارے جاننا چاہتا ہے تو چاسر کی یہ ایک نظم ہی اس کے لیے کافی ہوگی۔ اس نظم کے انتیس کردار ہیں جو درحقیقت اس دور کے جیتے جاگتے لندن کی ترجمانی کرتے ہیں۔ یہ نظم اس لحاظ سے منفرد اور بے مثال ہے کہ اس میں شاعر نے ہر میدان، پیشے اور گروہ کا کم از کم ایک نمائندہ کردار بنا کر پیش کیا ہے۔

جیفری چاسر کی 74 نظموں میں سے ایک اور مشہور نظم پارلیمنٹ آف فاؤلز سات سو مصرعوں پر مشتمل ہے۔ چاسر کو انگلستان میں بے پناہ مقبولیت اور شاہی دربار میں وہ حیثیت اور مرتبہ حاص ہوا جو اس زمانے میں بہت کم لوگوں کو نصیب ہوا۔ 1374ء میں اس وقت کے حکم ران ایڈورڈ سوم نے چاسر کے لیے زندگی بھر کے لیے وظیفہ مقرر کردیا۔

جیفری چاسر نے سیاست کے میدان میں بھی اپنا سکہ جمایا اور 1386ء میں برطانوی پارلیمنٹ کا رکن بنا۔ اسے وفات کے بعد لندن کے مشہور قبرستان ویسٹ منسٹر ایبے میں دفن کیا گیا جہاں کئی نام ور ادیب مدفون ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں