لیہ میں زہریلی مٹھائی سے مزید تین افراد جاں بحق، کل تعداد 25 ہوگئی -
The news is by your side.

Advertisement

لیہ میں زہریلی مٹھائی سے مزید تین افراد جاں بحق، کل تعداد 25 ہوگئی

لیہ: کہروڑلعل عیسن میں زہریلی مٹھائی سے متاثرہ مزید تین افراد آج زندگی کی بازی ہارگئے، جنہیں ملا کر مرنے والوں کی تعداد 25 ہوگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لیہ کی تحصیل کہروڑ لعل عیسن میں بچے کی پیدائش پرتقسیم کی جانے والی مٹھائی کو کھانے سے اب تک جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 25 ہوگئی ہے۔

پانچ روز پہلے لیہ کے علاقے کروڑ لعل عیسن میں بچے کی پیدائش پر کھلائی گئی مٹھائی سے اڑتالیس افراد کی حالت خراب ہوگئی تھی، انہیں لیہ، ملتان اور فیصل آباد کے مختلف اسپتالوں میں لےجایا گیا تھا، ڈاکٹروں کی بھرپور کوششوں کے باوجود اب تک پچیس افراد زندگی کی بازی ہار چکے ہیں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے مرنے والوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔

خوشی کے موقع پر تقسیم کی جانے والی مٹھائی زہرآلود تھی جسے کھاتے ہی پہلے روز دس افراد موت کے منہ میں چلے گئے جبکہ دوسرے روز بھی تین سالہ ارم ، حسیب اورعرفان نشتر ہسپتال میں دم توڑ گئے تھے۔

گزشتہ مزید تین افراد جاں بحق ہوگیے ہیں جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد بائیس ہوگئی تھی، ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ جاں بحق افراد کی تعداد مزید بڑھنے کا اندیشہ ہے۔

پولیس نے بیکری پر کام کرنے والے خالد نامی شخص سمیت تین افراد کو حراست میں لے لیا ہے جس کے ہاتھ سے بنی مٹھائی کھانے سے مذکورہ بالا اموات ہوئیں جبکہ مذکورہ دوکان کو بھی سیل کردیا گیا ہے۔

layyah

واضح رہے کہ زہرخورانی کا یہ واقعہ نیا نہیں بلکہ اس سے پہلے بھی خوشی کے تہواروں پراشیائے خورد نوش میں ملاوٹ کی بنا پر اس قسم کے واقعات پیش آتے رہے ہیں۔

گزشتہ ماہ سندھ کے ضلع ٹنڈو محمد خان میں ہولی کے تہوار کے موقع پرزہریلی شراب پینے سے کم ازکم پندرہ افراد جاں بحق ہوگئے تھے جبکہ متعدد کی حالت غیر ہوگئی تھی۔

اتنے بڑے پیمانے پرہلاکتوں سے علاقے کے لوگوں میں خوف و ہراس پایا جاتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں