The news is by your side.

Advertisement

بہت ساری وجوہات کے بعد پروازیں کھولنے کا فیصلہ کیا، زلفی بخاری

اسلام آباد : وزیر اعظم کے معاون خصوصی زلفی بخاری نے کہا ہے کہ سعودی عرب اور یو اے ای نے کرونا سے مرنے والوں کی باڈی نہ دینے کا قانون بنایا ہے انہیں وہیں دفنایا جاتا ہے۔چ

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے امور اوور سیز پاکستانی زلفی بخاری کا کہنا ہے کہ حکومت نے بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کی سہولت کےلیے پروازیں کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔

زلفی بخاری نے بتایا کہ سعودی عرب اور یو اے ای کے لیبر منسٹرز کیساتھ ہر ہفتے بات ہوتی ہے، سعودی عرب، یو اے ای کرونا سے انتقال کرنے والوں کی باڈی نہیں دیتا۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ مانتا ہوں ٹکٹنگ میں لوگوں کو مسائل ہوئے ہیں لیکن ڈیمانڈ زیادہ ہو اور سپلائی کم تو مسائل ہوتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ایک سفارتخانے میں صرف 6 سے 7 لوگ ہوتے ہیں اور اس دوران کرونا، لاک داؤن اور رش کنٹرول کرنے میں مسائل ہوئے لیکن ہم مسائل کے حل کےلیے کام کررہے ہیں، ٹکٹ مہنگی ہوئی اس مسئلے پر بھی کام کررہے ہیں۔

زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ گزشتہ 10 دن میں ایجنٹس کو ٹکٹ الاؤ کیے گئے پہلےسفارتخانہ ہی دیتا تھا، بیرون ملک پاکستانیوں کی مشکلات کا اندازہ ہے اسی لیے بیرون ملک پاکستانیوں کی واپسی کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں۔

معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانی کا کہنا تھا کہ پیر کو ہم ایک ایپ بھی لانچ کرنے جارہے ہیں، ایپ کے ذریعے ٹریک اینڈ ٹریسنگ کریں گے، ایپ کو شروع میں 5 دن کےلیے ٹیسٹنگ بیس پر چلایا جائیگا، کوئی ایپ ڈیلیٹ بھی کردے گا تو ہمیں پتہ چل جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں