The news is by your side.

Advertisement

ترکش رینٹل پاور کیس: عالمی عدالت نے پاکستان کے خلاف فیصلہ معطل کردیا

اسلام آباد : عالمی عدالت نے پاکستان کے خلاف ترکش رینٹل پاورپلانٹ کےحق میں دیا فیصلہ معطل کرتے ہوئے دوبارہ کارروائی شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

تٍفصیلات کے مطابق پاکستان کو بڑی کامیابی حاصل ہوگئی ، سرمایہ کاری سے متعلق فیصلوں کے لیے عالمی ٹریبونل، انٹرنیشنل سینٹر فار سیٹلمنٹ آف انوسٹمنٹ ڈسپیوٹ نے ترک کمپنی ’کارکے‘ کی طرف سے دائر رینٹل پاور کیس میں پاکستان کے خلاف دیا گیا فیصلہ معطل کردیا۔

عالمی عدالت نے پاکستان کو نوے کروڑ ڈالر ہرجانے ادا کرنے کا فیصلہ سنایا تھا، ٹریبونل نے پاکستان کے خلاف یہ فیصلہ اگست دوہزار سترہ میں دیا تھا۔

پی ٹی آئی حکومت نے نظرثانی کی دائر اپیل کی اور نئے شواہد پیش کیےتھے، جس پر عالمی ٹریبونل نے فیصلہ معطل کردیا۔

ذرائع کے مطابق موجودہ حکومت نے اس کیس میں کرپشن کے تازہ شواہد اکٹھے کیے ہیں، جس سے امید ہے کہ اس کیس کا فیصلہ پاکستان کے حق میں آئے گا۔

خیال رہے تاتیھان کاپر کمپنی کاپاکستان کے خلاف کیس عدالت میں زیر التواء ہے۔

یاد رہے آصف زرداری کی حکومت میں پاکستان ترکش کمپنی کارکے کے درمیان ایک معاہدہ ہوا تھا ، جس کے تحت کمپنی نے کراچی میں کرائے کا بجلی گھر لگایا گیا تھا اور اس بجلی گھر کو 2009 سے 231 میگا واٹ بجلی کی فراہمی شروع کرنی تھی جس میں وہ ناکام رہی اور صرف 30 سے 40 میگا واٹ بجلی فراہم کی۔

حکومت پاکستان اس معاہدے کی تحت ترکش کمپنی کو ماہانہ 94 لاکھ ڈالر کرائے کی مد میں ادا بھی کرتی تھی۔

تاہم سابق چیف جسٹس پاکستان افتخار محمد چوہدری نے ترکش رینٹل پاور پراجیکٹ کو غیر شفاف قرار دے معاہدے منسوخ کرنے کا حکم دیا تھا، ترکش کمپنی نے معاہدہ منسوخ ہونے پر ثالثی عدالت سے رجوع کیا اور پاکستان پر 2 ارب 10 کروڑ ڈالر ہرجانے کا دعویٰ کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں