The news is by your side.

آڈیو لیکس، وفاقی حکومت نے بڑا فیصلہ کرلیا

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیکس کی تحقیقات کے لئے جوائنٹ انٹروگیشن ٹیم (جی آئی ٹی) تشکیل دینے کیا فیصلہ کیا ہے۔

وزارت داخلہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیکس کی تحقیقات کیلئے وفاقی حکومت نے جے آئی ٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے ، جے آئی ٹی میں مختلف افسران کے علاوہ حساس اداروں کے نمائندے بھی شامل ہوں گے۔

ذرائع وزارت داخلہ کے مطابق جے آئی ٹی تحقیق کرے گی کہ ڈیٹا ہیک ہوا یا کسی نےچوری کرکے فروخت کیا؟، جی آئی ٹی یہ معلوم کرنے کی کوشش کریگی کہ وزیر اعظم ہاؤس میں ڈیوائسز لگائی گئیں یا موبائل ریکارڈنگ کی گئیں؟ اس کے علاوہ یہ بھی معلوم کیا جائے گا کہ ڈیٹا ہیک ہوا یا کسی نے چوری کرکے فروخت کیا۔

جےآئی ٹی کو اختیار ہوگا کہ وہ وزیراعظم ہاؤس کےعملے کو شامل تفتیش کرے،تحقیقاتی ٹیم اس بات کا بھی جائزہ لے گی واقعے کے وقت کون کون افسر وزیر اعظم ہاؤس میں موجودتھا؟

تحقیقاتی ٹیم وزیر اعظم ہاؤس پرمامور ڈائریکٹوریٹ کو بھی شامل تفتیش لا سکے گی، وزیر اعظم ہاؤس ،سیکریٹریٹ میں چھ ماہ سےتعینات اسپیشل برانچ اہلکاروں سےبھی تحقیقات ہونگی

یہ بھی پڑھیں: آڈیو لیک: وزیر اعظم اور مریم کے مفتاح سے متعلق گلے شکوے

ادھر پاکستان تحریک انصاف نے وزیراعظم اور وفاقی وزرا کی آڈیو لیک کو سپریم کورٹ میں جمع کرانے کا اعلان کیا ہے۔

پی ٹی آئی وکیل فیصل چوہدری نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو میں کہا کہ کل تک آڈیو لیک کی ٹرانسکرپٹ سپریم کورٹ میں جمع ہو جائے گی ، آڈیو کا فرانزک کرانے یا نہ کرانے کا فیصلہ سپریم کورٹ نے کرنا ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز وزیراعظم شہباز شریف کی مبینہ آڈیو ٹیپ سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی، مبینہ آڈیو ٹیپ میں وزیراعظم ایک حکومتی افسر کے ساتھ گفتگو کررہے ہیں جس میں افسر نے
انکشاف کیا کہ ’مریم نے داماد کے لیے بھارت سے مشینری منگوانے کی سفارش کی تھی۔‘

Comments

یہ بھی پڑھیں