The news is by your side.

Advertisement

فروغ نسیم کو دوبارہ وزیر قانون بنانے کا فیصلہ

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں آرمی چیف کی مدت ملازمت توسیع کیس کی پیروی کے لیے مستعفی ہونے والے بیرسٹر فروغ نسیم کو کیس کا فیصلہ آنے کے بعد دوبارہ وزیر قانون بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق فروغ نسیم نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سپریم کورٹ میں مدت ملازمت سے متعلق کیس کی پیروی کرنے کے لیے 26 نومبر کو وزیر قانون کے عہدے سے استعفیٰ دیا تھا۔

وزیر اعظم عمران خان کی منظوری کے بعد فروغ نسیم کے مستعفی ہونے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا تھا۔فر وغ نسیم کے مستعفی ہونے کے بعد وزیراعظم عمران خان کے کابینہ اراکین کی تعداد 49 سے کم ہوکر 48 جبکہ وفاقی وزرا 25 سے کم ہوکر 24 ہوگئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم مستعفی

سپریم کورٹ میں آرمی چیف کی مدت ملازمت توسیع کیس کی سماعت 3 روز جاری رہی جس میں فروغ نسیم نے آرمی چیف کی وکالت کرتے ہوئے حکومتی موقف پیش کیا۔

کیس کا فیصلہ آج سنائے جانے کے بعد بیرسٹر فروغ نسیم کو دوبارہ وزیر قانون بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے، بیرسٹرفروغ نسیم کل صبح عہدےکاحلف اٹھائیں گے۔

اسے بھی پڑھیں: سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں 6ماہ کی توسیع کردی

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں 6 ماہ کی توسیع کردی اور قانون سازی کیلئے معاملہ پارلیمنٹ بھیجنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر باجوہ اپنے عہدے پر برقرار رہیں گے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں