The news is by your side.

Advertisement

پشاور چڑیا گھر کے بعد کراچی چڑیا گھر میں بھی فیلو ہرن کے 9 بچوں کی پیدائش (ویڈیوز)

کراچی: گزشتہ ایک ماہ کے دوران پشاور چڑیا گھر میں ہرن کے 8 بچوں کی پیدائش کے بعد کراچی چڑیا گھر میں بھی فیلو ہرن کے 9 بچوں کی پیدائش ہوئی ہے۔

کراچی چڑیا گھر میں موجود سفید ہرن، جس کے ہاں ایک بچے کی پیدائش ہوئی ہے

اے آر وائی نیوز کے مطابق کراچی چڑیا گھر میں فیلو ڈیئر کے ہاں 9 بچوں کی پیدائش ہوئی ہے، براؤن اور سفید ڈیئر سے بھی ایک ایک بچے کی پیدائش ہوئی ہے، نئے مہمانوں کی آمد سے چڑیا گھر میں رونق اور بڑھ گئی ہے۔

رواں ماہ کے آغاز میں پشاور چڑیا گھر میں کالا ہرن اور فیلو ہرن نے بچوں کو جنم دیا تھا، چڑیا گھر انتظامیہ کا کہنا تھا کہ کالے ہرن (جس کو انگریزی میں بلیک بک کہا جاتا ہے) اور فیلو ہرن نے ایک ایک بچے کو جنم دیا۔

کراچی زو میں براؤن ہرن کے ہاں بھی ایک بچے کی پیدائش ہوئی ہے

صرف ایک مہینے میں پشاور چڑیا گھر میں مختلف نسلوں کی ہرنیوں کے ہاں 8 بچے پیدا ہوئے۔ چڑیا گھر کے ویٹرنری ڈاکٹر عبدالقادر نے بتایا تھا کہ کالے ہرن کا شمار قیمتی جانوروں میں ہوتا ہے اور پاکستان میں اس کی تعداد بہت کم ہے۔

ڈاکٹر قادر کا کہنا تھا کہ کامیاب افزائش کی وجہ سے پشاور چڑیا گھر میں جانوروں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔

ادھر، لاہور چڑیا گھر میں 18 مئی کو شیرنی کے بچوں کی پیدائش ہوئی تھی، انتظامیہ کا کہنا ہے کہ شیرنی نے اپنے بچوں کو تاحال دودھ نہیں پلایا، جس کے باعث ویٹرنری ڈاکٹرز کی زیر نگرانی تین بچوں کی نگہداشت کی جا رہی ہے، تاہم کمزور قوتِ مدافعت کے باعث ان بچوں کی صحت متاثر ہو رہی ہے۔

انتظامیہ کے مطابق ویٹرنری ایکسپرٹ ڈاکٹر عاصم خالد کی معاونت سے شیر کے بچوں کا علاج جاری ہے، چڑیا گھر کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ ان بچوں کی نگہداشت کے لیے ویٹرنری عملہ 24 گھنٹے تعینات کیا گیا ہے۔

انھوں نے کہا انسانوں کی طرح جنگلی جانور بھی بیمار ی کا شکار ہو سکتے ہیں، اس لیے ان کی بھرپور نگہداشت ضروری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں